مریدکے :کار اوررکشہ کے تصادم میں نوجوان جاں بحق

مریدکے :کار اوررکشہ کے تصادم میں نوجوان جاں بحق

  


مریدکے(نامہ نگار) انسانی زندگیاں بچانے کا جھانسہ دے کرکروڑوں روپے کی لاگت سے تعمیر کئے جانے والے انڈر پاس نے ایک اور قیمتی جان لے لی۔ این ایچ اے کی ناقص منصوبہ بندی کے باعث جی ٹی روڈ پر ٹریفک حادثات معمول بن گئے لیکن بے بس شہری اللہ کی مدد پر ہی اکتفا کرنے لگے۔ شیخوپورہ روڈ پر بھی موٹر سائیکل، کار اوررکشہ کے درمیان تصادم ایک نوجوان کی زندگی کا چراغ گل کر گیا۔ بتایا گیا ہے کہ مدینہ کالونی حدوکے کا رہائشی رحمت علی ولد خورشید کروڑوں روپے کی لاگت سے تعمیر کئے جانے والے انڈر پاس میں پانی بھرنے کے باعث تھانہ صدر کے سامنے جی ٹی روڈ عبور کر رہا تھا کہ تیز رفتار ٹرک نے اسے کچل کر موت کی نیند سلا دیا اور فرار ہو گیا۔ دریں اثناء مریدکے شیخوپورہ روڈ پر کھٹیالہ کے قریب موٹر سائیکل، کار اور چنگ چی رکشہ کے درمیان تصادم کے نتیجے میں مریدکے کا رہائشی نوجوان اعجاز شدید زخمی ہو گیا جسے شدید زخمی حالت میں تحصیل ہیڈ کوارٹرز ہسپتال مریدکے پہنچایا گیا جہاں ایمبولینس موجود نہ ہونے کے باعث ذیادہ خون بہہ جانے سے اس کی جان چلی گئی۔ یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ این ایچ اے نے جی ٹی روڈ پر ٹریفک حادثات کی روک تھام کا جھانسہ دے کر کروڑوں روپے کی لاگت سے گاڑیوں کے لیے ایک جبکہ پیدل افراد کے سڑک کراس کرنے کے لیے تین انڈر پاس تعمیر کئے مگر ناقص منصوبہ بندی کے باعث چاروں منصوبے بری طرح فیل ہو گئے اور شہری اپنی زندگیوں کو خطرے میں ڈال کر سڑک کراس کرنے پر مجبور ہیں۔ گاڑیوں کے لیے بنائے جانے والے انڈر پاس میں ہر وقت پانی بھرا رہتا ہے جس وجہ سے رکشہ ڈرائیور اور موٹر سائیکل سوار ون وے کی خلاف ورزی پر مجبور ہیں جبکہ دوسری صورت میں انہیں 8کلو میٹر کا چکر کاٹنا پڑتا ہے۔ مقامی عوامی نمائندگان کی چشم پوشی کے باعث شہری اللہ کی مدد کا انتظار کرکے ہی ہر روز قیمتی جانوں کا ضیاع برداشت کر رہے ہیں۔

مزید :

علاقائی -