یہودی انتہا پسندوں نے فلسطینیوں پر دھاوا بول دیا

یہودی انتہا پسندوں نے فلسطینیوں پر دھاوا بول دیا
یہودی انتہا پسندوں نے فلسطینیوں پر دھاوا بول دیا

  

یروشلم(نیوز ڈیسک)اسرائیل کے تین گمشدہ لڑکوں کی پر اسرار ہلاکت کے بعد فلسطین پر بارود کی بارود کی بارش شروع ہو گئی ہے اور لڑکوں کی تدفین کے موقع اسرائیل میں شدت پسند یہودیوں نے نہتے فلسطینیوں کو نشانہ بنایا ہے۔ اسرائیل کے شہرمودین میں پانچ فلسطینیوں پر حملے کئے گئے جن میں سے دو شدید زخمی ہوگئے جنہیں فوری طور پر ہسپتال لے جانا پڑا دارلحکومت تل ابیب میں شدت پسند یہودیوں پر جنونی کیفیت طاری ہو گئی اور انہوں نے پولیس پر بھی حملے شروع کر دیئے اور کئی گھنٹوں تک ٹریفک بھی بلاک کئے رکھی۔یہودی نوجوان فلسطینیوں کے خلاف نفرت انگیز نعرے لگاتے ہوئے شہر کی گلیوں میں دوڑتے رہے۔ غنڈہ گردی اور دنگا فساد کرنے والے ان نوجوانوں نے لڑکوں کے قتل کا بدلہ فلسطین سے لینے کی قسمیں کھائیں۔ ایک اور واقعے میں سینکڑوں لوگوں کے ہجوم نے تین فلسطینیوں پر اس وقت حملہ کر دیا جب وہ روزہ افطار کرنے میں مصروف تھے اور انھیں شدید پتھراﺅ کا نشانہ بنا۔ غرضیکہ اسرائیل میں چہارسو جنوبی یہودی نہتے فلسطینیوں کو ناکردہ گناہوں کی سزا دے رہے ہیںاور اس ظلم کے ساتھ اسرائیل اپنی مظلومیت کا ڈھنڈورا پیٹنے میں بھی مصروف ہے۔

مزید :

انسانی حقوق -