تحفظ پاکستان کالا قانون ہے، پارٹی رہنماﺅں نے مجھ سے پوچھے بغیر حمایت کی : الطاف حسین

تحفظ پاکستان کالا قانون ہے، پارٹی رہنماﺅں نے مجھ سے پوچھے بغیر حمایت کی : ...
تحفظ پاکستان کالا قانون ہے، پارٹی رہنماﺅں نے مجھ سے پوچھے بغیر حمایت کی : الطاف حسین
کیپشن: altaf

  

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک)متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطا ف حسین نے کہا ہے کہ تحفظ پاکستان کالاقانون ہے ، پارٹی رہنماﺅں نے مجھ سے پوچھے بغیر پی پی او کی حمایت کی ہے ۔الطاف حسین نے طاہرالقادری اور عمران خان سے احتجاج ملتوی کرنے کی درخواست کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان نازک دور سے گزر رہا ہے ، مسلح افواج دہشت گردوں کے خلاف نبرد آزما ہے ، ایم کیو ایم 6جولائی کو پاک فوج سے یکجہتی کا اظہارکرے گی ،شمالی وزیرستان میں دہشت گردوں کے خلاف آپریشن اگر پہلے ہو جاتا تو بہتر تھا ، کراچی میں طالبا ن نائزیشن پر میرا مذاق اڑا یا گیا ، دہشت گردی کے خلاف جنگ ہماری نہیں بلکہ ہم پر مسلط کی گئی ہے۔الطاف حسین نے کہا ہے کہ وڈیروں کی سیاست کا وقت چلا گیا اور محروم لوگوں کی حکمرانی کا وقت آگیا ہے ،اب اس ملک میں انقلاب آکر رہے گا ، خواہ کسی جماعت کے پرچم تلے آئے ، ان کی صدر یا وزیر اعظم بننے کی خواہش نہیں صرف اپنی زندگی میں انقلاب دیکھنا چاہتے ہیں ۔ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین نے کہا کہ جب انہوں نے کراچی میں طالبا نائزیشن کی بات کی تو اس کو مذاق سمجھا گیا اور طالبان کے خلاف بولنے پر کہا گیا کہ پختونوں کے خلاف بات کرتاہوں ایسے پروپیگنڈے کرکے پختون بھائیوں کو بہکایا گیا لیکن آج کراچی کی پٹھان قوم باشعور ہو چکی ہے اور ایم کیو ایم کے ساتھ ہے،پورے سندھ میں کوئی گاوں ایسا نہیں جہاں ایم کیو ایم کا کارکن نہ ہو ۔۔کراچی میں صحافیوں سے غیر رسمی ٹیلیفونک گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ صحافی بھی دہشت گردی کا شکار ہوئے ہیں ،صحافی بھائیوں نے جیلیں کاٹیں اور کوڑے کھائے ہیں ، جمہوریت کی بحالی میں صحافتی برادری کا کرداراہم ہے ، ہمیں میڈیا کی تنقید کو برداشت کرنا چاہئے۔

مزید :

کراچی -اہم خبریں -