کچھ ملیریا کے بارے میں

کچھ ملیریا کے بارے میں
 کچھ ملیریا کے بارے میں

  

ملیریا زندگی کو خطرے میں ڈالنے والے امراض میں سے ایک ہے اور بنیادی طور پرانسان کو Anopheles مچھر کے کاٹنے سے پھیلتا ہے۔ Anopheles مچھر میں پلازماپیراسائٹ موجود ہوتا ہے جو انسان کو کاٹنے کے بعد اس پیرا سائٹ کوانسانی خون میں شامل کر دیتا ہے ۔

ملیریا کی علامات:

ہلکی یا زور دارکپکپاہٹ، تیز بخار، پسینہ آنا ،سر درد،متلی ،قے آنا، پیچش، خون میں ریڈ سیلز کی کمی ،پٹھوں میں درد،دورے پڑنا ،کومااور پاخانے میں خون آنا شامل ہیں

علاج :

اگر بیان کردہ علامات میں سے کوئی بھی علامت فرد میں ظاہر ہو تو فوری طور پر ملیریا کابلڈ ٹیسٹ کرایا جائے اورجو رپورٹ ملے، اس کی روشنی میں فوری طور پر قریبی ڈاکٹر سے علاج معالجہ کرایا جائے

ملیریا کی پیچیدگیاں:

ملیریا بظاہر ایک مچھر کے کاٹنے سے فرد کو متاثر کرتا ہے لیکن پیچیدہ صورت حال ہو جائے تو دماغ تک خون کی ترسیل کرنے والی رگیں سوج جاتی ہیں، پھیپھڑوں میں پا پلمونری ورم یعنی پانی جمع ہونے سے سانس کے مسائل پیدا ہوسکتے ہیں اورجگر،گردے یاکسی دوسرے اندرونی اعضاء کو ناکارہ کر نے کی صورت میں جان کو خطرہ لاحق رہتا ہے ۔

خون کی کمی اور خون میں ریڈ سیل کی کمی کے باعث خون میں شکر کی مقدار کم ہوسکتی ہے۔

ملیریا سے بچاؤ :

رات کو سوتے وقت چارپائی ، بیڈ یا پلنگ پر جالی تان کر سونا،مچھر مار سپرے یا الیکٹرانک مچھر رمار ڈیوائس کا استعمال اور مچھر وں کو دور بھگانے کے لئے لوشن کاا ستعمال، فجر اور مغرب کے اوقات میں گھروں کے دروازے بند کرکے مچھروں کو گھر میں داخل ہونے سے روکا جا ئے۔

مزید : کالم