جگہ کی فراہمی پراپنی خدمات دینے کو تیار ہوں:جان شیرخان

جگہ کی فراہمی پراپنی خدمات دینے کو تیار ہوں:جان شیرخان
 جگہ کی فراہمی پراپنی خدمات دینے کو تیار ہوں:جان شیرخان

  

اسلام آباد(صباح نیوز)سکواش کے سابق عالمی چیمپئن جان شیرخان نے کہا ہے کہ حکومت سکواش کی اکیڈمی کے لئے جگہ فراہم کرے تو ملک و قوم کے لئے اپنی خدمات دینے کے لئے تیار ہوں۔ میرا تیار کیا ہوا کھلاڑی عالمی سطح پر ملک کا نام روشن کرے تو اس سے اچھی بات کون سی ہے۔گراس روٹ لیول پر ایسی اکیڈمیز قائم کی جائیں جہاں تربیت کے ساتھ تعلیم بھی دی جائے ۔ گذشتہ روز میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اگر میرا تیار کیا ہوا کھلاڑی عالمی سطح پر ملک کا نام روشن کرے تو اس سے اچھی بات کون سی ہے، انہوں نے کہا کہ حکومت کو چاہئے کہ گراس روٹ لیول پر کھیلوں کی اکیڈمیز قائم کرے جس میں کھلاڑیوں کو سارا سال تربیت دینے کے ساتھ ، ساتھ تعلیم بھی دی جائے ، جان شیر خان نے کہا ہے کہ ہمارے دور میں اتنی سہولیات بھی نہ تھی لیکن میں نے بڑی محنت کرکے عالمی چیمپئن بننے کا اعزاز حاصل کیا اور میں آٹھ ، آٹھ گھنٹے کورٹ میں پریکٹس کرتا تھا، عالمی چیمپئن بننے کے لئے کھلاڑیوں کو دن رات سخت سے سخت محنت کرنے کی ضرورت ہوتی ہے،انہوں نے کہا کہ اس وقت تعلیمی اداروں میں گرمیوں کی چھٹیاں ہیں اور فیڈریشنوں کو اس کا فائدہ اٹھانا چاہئے تھا کہ اس دوران تربیتی کیمپ لگائے جائیں جس سے نئے کھلاڑی سامنے آسکتے تھے اور پھر ان کو قومی جونیئر ٹیموں میں شامل کرکے تربیت دی جاتی، ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ میرے نزدیک کھلاڑی کے پاس پریکٹس کے دوران موبائل فون نہیں ہونا چاہئے کیونکہ کھلاڑی ہروقت نیٹ اور فیس بک پر زیادہ سے زیادہ دلچسپی لیتا ہے کیونکہ اس کو معلوم نہیں ہوتا کہ اس میں میرا کتنا بڑا نقصان ہے، ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ کوچ کا درجہ بھی والدین اوراستاد کے برابر ہوتا ہے اور کھلاڑی کو اپنے کوچ کی قدر کرنی چاہئے کیونکہ والدین کے بعد کھلاڑی کو کوچ ہی تربیت دیتا ہے۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی