پاور انرجی کے مسئلے نے ملک کی معیشت کی بنیادیں ہلا کر رکھ دی ہیں۔طارق فیروز

پاور انرجی کے مسئلے نے ملک کی معیشت کی بنیادیں ہلا کر رکھ دی ہیں۔طارق فیروز

لاہور ( آن لائن) انجمن تاجران لاہور کے صدر میاں طارق فیروزو جوائنٹ سیکرٹری میاں سلیم نے اپنے مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ پاور انرجی کے مسئلے نے ملک کی معیشت کی بنیادیں ہلا کر رکھ دی ہیں پچھلے 11 ماہ کے دوران 30 ارب ڈالر کا تجارتی خسارہ حکومت کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے حکومت کو چاہیے کہ وہ تجارتی خسارہ کو کنٹرول کرنے کیلئے جامع پالیسی مرتب کرے ، حکومت تاجروں کے ساتھ اپنے معاملات بہتر بنائے،غیر ضروری اور بلاوجہ لگائے گئے ٹیکسوں کو ختم کیا جائے ،توانائی کے بحران پر قابو پائے بغیر معاشی حالا ت بہتر نہیں ہو سکتے ۔انہوں نے کہا کہ ملک میں بے شمار وسائل ہونے کے باوجود ملکی معیشت کی قسمت زوال پذیر ہے ان وسائل میں پانی سے سستی ترین بجلی پیدا کی جا سکتی ہے جس کے لئے کالا باغ ڈیم انتہائی موزوں ترین ہے جو کہ 5سال کی کم ترین مدت میں بجلی کی پروڈکشن دے سکتا ہے اس کے علاوہ کوئلے سے سستی بجلی بنائی جا سکتی ہے جس کیلئے تھرکول پاور پراجیکٹ پر ڈاکٹر ثمر مبارک کامیاب تجربات کر چکے ہیں اس کے علاوہ ایٹمی پاور پلانٹ سے شمسی توانائی سے ، ہوا سے ونڈپاور، جانوروں کے گوبر اور کوڑا کرکٹ سے بجلی پید اکی جاسکتی ہے لیکن پچھلے پ20 سال سے کسی بھی حکومت نے ملکی مسائل کو حل کرنے کی کوشش نہیں کی ۔

انہوں نے کہا کہ منگلا اور تربیلا ڈیم کی اگر صفائی کی جائے توان کی پیداوار ڈبل کی جا سکتی ہے آج بھی حکومت دیا میر اور بھاشا ڈیم بنانے کی باتیں کر رہی ہے جو کہ 13سے 15سالوں کی مدت میں مکمل ہونگے ،جبکہ کالا باغ ڈیم 5سال کی انتہائی کم ترین مدت میں تعمیر ہو سکتا ہے اس کی مخالفت کی جا رہی ہے،انہوں نے کہاکہ اعتراض کرنے والے پرائیوٹ پاور یونٹ آئی پی پیزکے مالکان ہیں اور چند مفاد پرست سیاستدان جو بھارت کی جھولی میں بیٹھ کر کالا باغ ڈیم کی مخالفت کر رہے ہیں#/s#

مزید : کامرس