نواز شریف اپنی چوری بچانے کیلئے جمہوریت کو تباہ کر رہے ہیں، عمران خان

نواز شریف اپنی چوری بچانے کیلئے جمہوریت کو تباہ کر رہے ہیں، عمران خان
 نواز شریف اپنی چوری بچانے کیلئے جمہوریت کو تباہ کر رہے ہیں، عمران خان

  

لاہور(اے این این) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہاہے کہ اندھیری رات ختم اور اب نیا پاکستان بننے والا ہے ،پہلی دفعہ طاقتور قانون کے نیچے آئے ہیں ،دشمن نے پاکستان کو اتنا نقصان نہیں پہنچایا جتنا نواز شریف نے پہنچایا ، نواز شریف اپنی چوری بچانے کیلئے جمہوریت کو تباہ کر رہے ہیں،حکمرانوں کی بوکھلاہٹ دیکھ کر خوشی ہوتی ہے کہ اس طرح ان کے اصل چہرے سامنے آئیں گے، آئندہ الیکشن کیلئے نمائندوں کا حتمی انتخاب خود کروں گا۔گارڈن ٹاؤن لاہور میں واقع پارٹی سیکرٹریٹ میں صحافیوں سے غیررسمی گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اندھیروں کے بعد نئی صبح طلوع ہونے والی ہے، پاناما کے معاملے پر قوم کو پیشگی مبارک دے چکا ہوں نواز شریف پاکستان کا گاڈ فادر ہے، انہوں نے تمام اداروں میں اپنے لوگ بٹھائے ہوئے ہیں، جب بھی احتساب کا گھیرا تنگ ہوتا ہے تو انکی جمہوریت خطرے میں پڑ جاتی ہے۔ آج تک شریف فیملی کا کبھی احتساب نہیں ہوا، اقتدار جاتا دیکھ کرن لیگ کو جمہوریت خطرے میں نظر آنے لگی ہے، شریف برادران نے سعودی عرب جانے کیلئے 10 سال کا معاہدہ کیا اب ہمیں درس دیا جا رہا ہے کہ جمہوریت خطرے میں ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ پاکستانیوں کو مبارک باد دے رہے ہیں کہ اندھیری رات ختم اور نیا پاکستان بننے والا ہے، طاقتور قانون کے نیچے آئے ہیں ایسا پہلے کبھی نہیں ہوا، مسلم لیگ(ن) والے سوالوں کے جواب دینے کے بجائے کہہ رہے ہیں کہ سازش ہورہی ہے،(ن)لیگ جمہوریت کی آڑ میں چھپنا بند کردے کیونکہ جمہوریت نہیں مافیا خطرے میں آ رہا ہے۔ مسلم لیگ (ن) فوجی آمریت کی پیداوار ہے، جنرل جیلانی، ضیاء الحق کی گود میں پلنے اور بینظیربھٹو کے خلاف اسامہ بن لادن سے پیسے لینے والے جمہوریت کا سبق دے رہے ہیں، آئی ایس آئی سے پیسے لینے والے اب کہہ رہے ہیں کہ جمہوریت خطرے میں ہے، نواز شریف اپنی چوری بچانے کے لیے جمہوریت کو تباہ کر رہے ہیں جب کہ یہ مافیا ڈان ہیں دشمن نے پاکستان کو اتنا نقصان نہیں پہنچایا جتنا نواز شریف نے پہنچایا۔ کرپشن تب رکتی ہے جب اداروں کومضبوط کیا جاتا ہے، نواز شریف اورآصف زرداری کے نیچے فرشتے بھی کھڑے کردیئے جائیں تو کرپشن نہیں رکے گی پاکستان میں پہلی بار ایک طاقت ور کا احتساب کیاجارہا ہے۔ پاکستان میں لوگ تحریک انصاف میں شامل ہونا چاہتے ہیں جو بھی شامل ہوتاہے وہ پارٹی کے نظریے پرآتاہے۔انہوں نے کہا کہ انہیں کسی صحافی سے نہیں بلکہ میڈیا کے گاڈ فادرسے مسئلہ ہے جوپیسے لے کر نوازشریف کو بچانے کی کوشش کررہے ہیں اس حوالے روز نئی نئی ہیڈ لائنز لگائی جاتی ہیں۔ نوازشریف پاکستان کا الطاف حسین ہے جس نے پاکستان کو جتنا نقصان پہنچایا اتنا کوئی دشمن بھی نہیں پہنچا سکااگر شریف فیملی نے سپریم کورٹ کے 13سوالات کے جواب نہ دئیے توانکی اگلی عید لندن نہیں اڈیالہ جیل میں ہوگی، پانامالیکس کے متعلق فیصلے کے بعد ہم نے الیکشن کی تیاری شروع کردینی ہے اورکوشش کریں گے کہ بہترین لوگوں کو ٹکٹ دیں اس بار میں پارلیمانی بورڈ کی سفارشات کے بعد میں خود ہر ٹکٹ کے متعلق فیصلہ کروں گا ۔ پاناما لیکس کیس پر ہم سڑکوں پر آسکتے تھے لیکن ہم سپریم کورٹ گئے وہاں شریف فیملی کوئی ثبوت نہیں دے سکی جس کی وجہ سے دو ججوں نے فوری نااہل قراردیا جبکہ تین ججوں نے مزید تحقیقات کا فیصلہ کیا سپریم کورٹ کے اس فیصلہ پر شریف فیملی نے مٹھائیاں بانٹھی انکاخیال تھاکہ وہ جے آئی ٹی کو خرید لیں گے کیونکہ انہوں نے ہمیشہ اداروں میں پیسہ چلایاتھالیکن جب ایسا نہیں ہوسکا تو انہوں نے جے آئی ٹی کے خلاف مہم شروع کردی جو وزیر عوام کے ٹیکسوں سے تنخوائیں لیتے ہیں وہ شریف فیملی کو بچانے کیلئے میدان میں نکلے ہیں ؂ہمیں جمہوریت کا سبق دے رہے ہیں ۔ سپریم کورٹ میں شریف فیملی کی کرپشن کا کیس چل رہاہے وزراء کا اس میں کوئی کام نہیں ۔ امریکی جاسوس ریمنڈ ڈیوس کے متعلق سوال پر عمران خان کاکہناتھاکہ اگر پرویز مشرف کے دورحکومت نے ریمنڈ ڈیوس کا واقعہ ہوتا تو پھر ساراالزام فوج پر آنا تھالیکن جس وقت ریمنڈ ڈیوس کو چھوڑا گیا اسوقت سول حکومت تھی اورجو کچھ بھی ہوا وہ سول حکومت نے کیاتھا ۔ا نوازشریف نے ہر شعبے میں اپنے لوگوں کو بیٹھایا ہواہے جنہیں پیسے دے کر استعمال کرتے ہیں میڈیا میں گاڈ فادر جعلی خبریں لگاکر انہیں بچانے کی کوشش کررہاہے لیکن انہیں بچایا نہیں جاسکتا ۔ شریف فیملی کی کرپشن کا دفاع قطری خط تھا وہ خط دینے والا آیا نہیں اب جب سپریم کورٹ نے کہہ دیا کہ اگر خط دینے والا قطری نہیں توخط کو ردی کی ٹوکری میں پھینک دیں جس پر میں پر میں پر اعتماد میں ہوں کہ اب شریف فیملی نہیں بچ سکتی ، نوازشریف کے نزدیک نئے پل اورسڑکیں بنانا نیاپاکستان ہے اورمیرے نزدیک عدل وانصاف والا معاشرہ لانا نیا پاکستان ہے جمشید دستی کے متعلق سوال پر کہاکہ پاکستان میں قانون صرف اپوزیشن والوں کیلئے ہیں پانامہ کاکیس کرپشن مافیا کے خلاف ہے جو بھی تحریک انصاف میں آتا ہے وہ ہماری نظریہ کو جوائن کرتاہے لوگوں کے آنے جانے سے پارٹی کا منشور خراب نہیں ہوتاہم نے کنٹرول رکھنا ہے کوئی فرشتے توآنے نہیں۔ ہم نے 900لوگوں کو الیکشن کے ٹکٹ دینے ہیں 2013کے انتخابات میں میرے پاس اتنا ٹائم نہیں تھا سفارشات کی بنیاد پر پارٹی ٹکٹ جاری کئے تھے لیکن اس بار میں پارلیمانی بورڈ کی سفارشات کے بعد میں خود ہر ٹکٹ کے متعلق فیصلہ کروں گا ۔

عمران خان

مزید : صفحہ اول