پبی‘ خاتون نے آشنا کی مدد سے سگے بھائی کو قتل کر دیا

پبی‘ خاتون نے آشنا کی مدد سے سگے بھائی کو قتل کر دیا

پبی ( نما ئندہ پاکستان) ناجائز تعلقات کا راز افشاء ہونے کی ڈر سے آپنے آشنا کی مدد سے آپنے سگے بھائی کو گلے میں پھندا ڈال کر ہلاک کرنے والی دوشیزہ آشنا سمیت گرفتار۔آلہ قتل برآمدتھانہ اکبر پورہ کے علاقے بالو اندھے قتل کا ڈراپ سین ۔کہانی ناجائز تعلقات کے رازافشاء ہونے کی شاخسانہ نکلی۔سائنسی خطوط پر استوار تفتیش سے اندھے قتل کا پردہ پاش۔بہن نے آپنے ہی (ماں جائے )بھائی کو ہاتھوں سیب پکڑ کر آپنے آشنا کے زریعے گلے میں پھنداڈال کر پھانسی دے دی۔ملزمان گرفتار۔ملزمان کی نشاندہی پرتندور سے آلہ قتل برآمدتفصیلات کے مطابق :۔مسمی نور محمد ولد نظر محمدسکنہ بالو نے آکبر پورہ پولیس کورپوٹ درج کرائی کہ میں آپنی گھروالی کیساتھ کہیں گیا ہوا تھا کہ اطلاع ملی کہ تمارا بیٹا برکت اللہ کی لاش مردہ خانے پبی ہسپتال میں پڑی ہے۔جا کر دیکھا تو واقعی میرا بیٹا تھا ۔جب میں نے دیکھا تو اس کے گلے پر پھانسی ہونے کے نشانات تھے۔میں نے آپنی بیٹی مسماۃ تسلیم سے دریافت کیاتو اس نے بتایا کہ میرا بھائی کیتھوں سے واپس آیا تو کہا کہ میری طبیت خراب ہے۔میں نے جلدی سے قہوہ بنا کر دیا۔مگر اس نے خون کی الٹیاں کرنی شروع کر دی۔پڑوسیوں کی مددسے ہسپتال پہنچایا۔ ان تمام بیانات میں کچھ چیزیں وضاحت طلب تھی ۔جس پر فوری طور پرانکوائری شروع کی گئی۔انکوائری میں پوسٹمارٹم رپوٹ نے تمام پردے اٹھا دیے۔پتہ چلا کہ لڑکے کو کسی نے پھانسی دے کر باقاعدہ قتل کردیا ہے۔مقدمہ علت نمبر181 مورخہ۔ 27-062017 جرم۔302 PPC کے تحت مقدمہ درج کیا گیا۔واقعے کا اعلی سطح پر نوٹس لیتے ہوئے DPO نوشہرہ کیپٹن (ر) واحد محمود(PSP )نے SP انوسٹی گیشن جھانزیب خانکی سربراہی میں DSP پبی سرکل لقمان خان ،SHO تھانہ اکبرپورہ انسپکٹر فیاض خان،OII منیر خان پر مشتمل اعلی سطح انکوائری کمیٹی تشکیل دیں کر جلد از جلد آصل حقائق منظر عام پر لانے اور واقعے میں ملوث ملزمان کو بے نقاب کرکے گرفتار کرنے کا ٹاسک حوالے کیا ۔انکوائری کمیٹی ٹیم نے جدید طریقہ تفتیش کو آپناتے ہوئے ملزم تنویر شہزاد ولد توقیر ناصر سکنہ بالوتک رسائی حاصل کر کے گرفتار کیا ۔دوران تفتیش ملزم نے بتایا کہ میرے مسماۃ تسلیم کیساتھ ناجائز تعلقات تھے ۔روز وقوعہ تسلیم نے مجھے میسج کیا کہ آبو اور آمی کہیں گئے ہوئے ہیں۔تم گھر آجاؤ۔حالت سازگار ہے۔میں فوراً وہاں آپنے ہوس کے ہاتھوں گیا ۔اور وہاں ہم نے پیار کا کھیل شروع کیا مگر اسی دوران تسلیم کا بھائی خلاف توقع اچانک گھر آیا تو ہمیں شیطانی حالت میں مگن قابل اعتراض حالت میں دیکھا ۔اس نے کہا کہ میں آبو اور آمی کو بتا ونگا ۔ہم نے اس وقت بڑی منت سماجت کی کہ چپ رہو مگر وہ بضد تھا ۔آپنا شیطانی راز افشاء ہونے اور بدنامی سے بچنے کے لیے تسلیم نے برکت اللہ کے ہاتھ پکڑے اور میں نے شیرخواربچوں کو کپڑے میں لپیٹ کر باندھنے والی رسی سے اس کے گلے میں پھندا ڈال کرقتل کر دیا۔اورالزام سے بچنے کے لیے ڈرامہ رچایا کہ برکت اللہ کو کچھ ہو ا ہے۔مگر پولیس کی جدید طریقہ تفتیش اور پوسٹ مارٹم رپوٹ نے پردہ پاش کر دیا۔ملزمان کی نشان دہی پر تندور میں پڑا آلہ قتل( شیرخواربچوں کو کپڑے میں لپیٹ کر باندھنے والی رسی )رسی برآمد کر لی گئی ۔اس دردناک و الم ناک اندھے قتل کیس کو فوراًحل کرنے پر اہل علاقہ معززین اور علاقہ روام کی کثیرتعداد نے ضلعی پولیس سربراہ واحد محمود اور ان کی ٹیم کو مبارکباد دیتے ہوئے ان کی بہترین کارکردگی کو سراہا۔اور جرائم کے انسداد کے کی جانے والی ہر کوشش ہر کاروائی میں نوشہرہ پولیس کیساتھ آپنے مکمل تعاون کے عزم مصمم کا اعادہ کیا۔ضلعی پولیس سربراہ واحد محمودنے پبی سرکل پولیس کی کارکردگی کو مثالی قرار دیتے ہوئے اظہار اطمینان ظاہر کیا اورمستقبل میں مزید بہتر کارکردگی کی امید ظاہر کرتے ہوئے ان کو کہا کہ عوامی تعاون کیساتھ ساتھ جدید طریقہ تفتیش سے استفادہ کر تے ہوئے پولیس افسران کو آپنے پیشہ ورانہ روزمرہ کے افیشل امورنمٹانے میں ایک بہترین سہولت میسر ہے۔جس سے استفادہ وقت کی اہم ترین ضرورت ہے۔اس موقع پر ضلعی پولیس سربراہ نے تفتیشی ٹیم کے لیے نقد انعامات اور سرٹیفیکیٹ دینے کا بھی اعلان کیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر