جندول‘ ثمرباغ میں عید کے دن سے بجلی کی آنکھ مچولی جاری

جندول‘ ثمرباغ میں عید کے دن سے بجلی کی آنکھ مچولی جاری

جندول(نمائندہ پاکستان) تحصیل ثمرباغ میں عید کے دن سے بجلی کی آنکھ مچولی جاری ، منتخب نمائندوں نے بھی چپ کا روزہ رکھ لیا ، مقامی لوگ شدید مشکلات سے دوچار ، تفصیلات کے مطابق تحصیل ثمرباغ میں عید کے دن سے بجلی کی آنکھ مچولی جاری ہے اور بجلی چوبیس گھنٹوں کے دوران تین گھنٹے بھی دستیاب نہیں ہوتی مقامی مشران تحصیل کونسلر و رہنماء تحریک انصاف ڈاکٹر سربلند خان ، سید لقمان بادین ، شکیل احمد ، ملک خان بادشاہ خاطر ،عالمگیر خان ، نوید اختر وغیرہ کے مطابق بجلی کچھ لمحات کیلئے آ جاتی ہے اور پھر گھنٹوں غائب رہتی ہے ، مقامی لوگوں کے مطابقانتہائی کم وولٹیج کی وجہ سے اکثر لوگوں نے ہیوی ریگولیٹر خرید رکھے ہیں اور ریگولیٹر سمیت لوگوں نے ڈبل فیز کنکشن بھی حاصل کر رکھے ہیں مگر پھر بھی بجلی کی وولٹیج اتنی کم ہوتی ہے کہ اس سے پنکھا تک نہیں چل پاتا ، مشران نے مطابق منتخب نمائندے اور صاحب ثروت لوگ سولر سسٹم اور جرنریٹر سے کام چلا رہے ہیں مگر غریب لوگوں کو اس مسئلہ کی وجہ سے شدید مشکلات کا سامنا ہے مقامی لوگوں کے مطابق منتخب ممبران نے بھی چپ کا روزہ رکھ لیا ہے اور مہینہ میں کبھی کبھار چیف پیسکوں اور یا بجلی گریڈ کا دورہ کر کے سوشل میڈیاں پر خبریں پھیلا دیتے ہیں کہ بجلی مسائل جلد حل ہو جائے گے مگر تا حال بجلی کا کوئی مسئلہ حل نہ ہوا ، مقامی مشران کے مطابق منتخب نمائندوں نے گیارہ ہزار ایکسپریس لائن کو چار میں میں تعمیر کرنے کا جو وعدہ کیا تھا وہ وعدہ دو سال میں دو سری بار افتتاح کر کے بھی مکمل نہ کیا جا سکا ، مقامی لوگوں نے حکومت اور واپڈاء حکام سے بجلی مسائل حل کرنے کیلئے اقدامات کرنے کا مطالبہ کیا اور ممبران اسمبلی سے مطالبہ کیا کہ اگر انہیں ذرا بھی عوامی مسائل کا احساس ہے تو کم از کم اسمبلی فلور پر مذکورہ مسئلہ اٹھائیں اور تحصیل ثمرباغ میں بجلی لوڈ شیڈنگ ضلع لوئر دیر کے دیگر تحصیلوں کے برابر کیا جائے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر