گھریلو تنازع، بھائی نے فائرنگ کر کے بہن، بہنوئی موت کے گھاٹ اتار دئیے

گھریلو تنازع، بھائی نے فائرنگ کر کے بہن، بہنوئی موت کے گھاٹ اتار دئیے

خانیوال، ٹھٹھہ صادق آباد (نمائندہ پاکستان، بیورونیوز) روٹھی بیوی کو منانے آئے خاوند،بیوی پر لڑکی کے بھائیوں کی فائرنگ،میاں ،بیوی موقع پر جاں بحق،ملزمان موقع سے فرارہونے میں کامیاب،پولیس موقع پر پہنچ گئی،پولیس نے لاشیں قبضہ میں لیکر پوسٹ مارٹم کے لئے ہسپتال منتقل کردیں،لاشیں گھنٹوں دھوپ میں ہسپتال پڑی رہیں،پوسٹ مارٹم لیٹ ہونے پرمقتولین کے ورثاء کا احتجاج،پوسٹ مارٹم کے بعد لاشیں ورثاء کے حوالے ،مقتول کے بھتیجے کی مدعیت میں 3نامزد ملزمان کیخلاف (بقیہ نمبر44صفحہ12پر )

دہرے قتل کا مقدمہ تھانہ ٹھٹھہ صادقّ آبادمیں درج، قاتل کا والدگرفتار،ملزمان کی تلاش جاری ہے،پولیس مصروف تفتیش ہے،ایس ایچ او غلام مصطفی سنگھیڑا،انچارج ہیومی سائیڈ سیل فلک شیر ،تفصیل کے مطابق ٹھٹھہ صادق آباد کے نواحی موضع علی شیر واہن کھوہ چاہ کرپے والا کے رہائشی محنت کش رانا یوسف کی بیٹی نورین بی بی اپنے خاوند بستی رام کلی ہیڈ نوبہار ملتان کے رہائشی رانا اجمل ولد لیاقت علی سے گھریلو جھگڑے کے باعث ناراض ہوکردوماہ سے اپنے میکے بیٹھی ہوئی تھی، جس کا نورین کے بھائیوں رانا امجد،رانا ساجد کو رنج تھا،گزشتہ رات نورین کا خاوند رانا اجمل اس کو اپنے گھرلیجانے کے لئے علی شیر واہن آیا تو نورین کے بھائی رانا امجدکا اپنے بہنوئی اجمل کے ساتھ جھگڑا ہوگیا،جس پررانا امجد نے طعیش میں آکر اپنے بھائی رانا ساجد دیگر کے ہمراہ اپنے بہنوئی محمداجمل پر فائرنگ کی توان کی بہن نورین سامنے آگئی،گولیاں لگنے سے نورین جاں بحق ہوگئی،جبکہ دوبارہ ا فائرنگ کرنے سے ان کا بہنوئی محمداجمل پسلیوں میں گولیاں لگنے اور زیادہ خون بہنے سے جاں بحق ہوگیا،پر جبکہ ملزمان رانا امجد،رانا ساجد دیگرقتل کی واردات کے بعد موقع سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے،اطلاع ملنے ایس ایچ اوپولیس تھانہ ٹھٹھہ صادق آباد غلام مصطفی سنگھیڑا،انچارج ہیومی سائیڈ سیل جہانیاں فلک شیر بھٹی ،اے ایس آئی شوکت علی پولیس نفری کے ہمراہ موقع پر پہنچ گئے،پولیس کی طرف سے مقتولین میاں بیوی اجمل ،نورین کی لاشیں قبضہ میں لیکر پوسٹ مارٹم کیلئے رورل ہیلتھ سنٹر ٹھٹھہ صادق آباد لائی گئیں،جہاں لیڈی ڈاکٹر نہ ہونے کے باعث دونوں کی لاشیں پوسٹ مارٹم کیلئے تحصیل ہیڈ کوآرٹر ہسپتال جہانیاں منتقل کردیں گئیں،جبکہ تحصیل ہیڈ کوآرٹر ہسپتال جہانیاں میں کئی گھنٹوں تک لاشیں دھوپ میں پڑی رہیں اور پوسٹ مارٹم لیٹ ہونے پر مقتولین کے ورثاء کی طرف سے شدید احتجاج کیا گیا،پولیس ٹھٹھہ صادق آباد کی طرف سے رانا امجد کے والد یوسف ولد خیر دین کوگرفتار کر لیا گیا ہے،جبکہ پولیس تھانہ ٹھٹھہ صادق آباد کی طرف سے مقتول رانا اجمل کے بھتیجے محمد دانش ولد محمد اکمل سکنہ بستی رام کلی ملتان کی مدعیت میں دوہرے قتل کا مقدمہ نمبر123/17بجرم 302نامزد ملزمان رانا امجد،رانا ساجد پسران رانا محمد یوسف،اور چچاکے بیٹے رانا مبارک علی کے خلاف درج کر لیا گیا ہے،مقتولین کے پسماندگان میں 2معصوم بیٹیاں شامل ہیں،ایس ایچ او تھانہ ٹھٹھہ صادق آباد چوہدری غلام مصطفی سنگھیڑا،انچارج ہیومی سائیڈ سیل جہانیاں فلک شیربھٹی نے بتایا کہ پوسٹ مارٹم کے بعد لاشیں ورثاء کے حوالے کردی گئی ہیں،جبکہ ایک شخص کو گرفتار کرتے ہوئے مقدمہ درج کر لیا گیا ہے،جبکہ اصل ملزمان کی تلاش کیلئے پولیس ٹیمیں تشکیل دے دی گئی ہیں،ملزمان کی تلاش جاری ہے،مقتول اجمل کے بھتیجے دانش نے بتایا کہ اس کے چچا اجمل اور چچی نورین کو ناحق قتل کیا گیا ہے،قاتلوں کو فوری گرفتار کرکے انصاف فراہم کیا جائے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر