پانامہ ہو یا بے نامہ ،پاکستان کی تعمیر وترقی کے منصوبے مکمل کرتے جائیں گے شہبازشریف کا ساہیوال کول پاور پراجیکٹ کی افتتاحی تقریب سے خطاب

پانامہ ہو یا بے نامہ ،پاکستان کی تعمیر وترقی کے منصوبے مکمل کرتے جائیں گے ...
پانامہ ہو یا بے نامہ ،پاکستان کی تعمیر وترقی کے منصوبے مکمل کرتے جائیں گے شہبازشریف کا ساہیوال کول پاور پراجیکٹ کی افتتاحی تقریب سے خطاب

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہاہے کہ 1320میگا واٹ کے ساہیوال کول پاور پراجیکٹ کا 22ماہ کی ریکارڈ مدت میں مکمل ہونا انتھک محنت ، امانت ،دیانت اور شفافیت کی داستان ہے،اس منصوبے نے کم مدت میں مکمل ہو کر نہ صرف دنیا بلکہ چین کا اپنا ریکارڈ بھی توڑ دیاہے ۔2013-14میں پاکستان اور چین کی قیادت نے جو حسین خواب دیکھا تھا آج اس کا پہلا ستون سا ہیوال کول پاور پراجیکٹ کی تکمیل کی صورت میں مکمل ہوچکاہے اوریہ منصوبہ ہر لحاظ سے ایک سنگ میل کی حیثیت رکھتا ہے۔ساہیوال کول پاور پراجیکٹ سی پیک کا پہلا میگا منصوبہ ہے جو قومی معیشت کے استحکام میں شاندار کردار اداکررہاہے ۔180ارب روپے کی لاگت سے مکمل ہونے والے اس منصوبہ کے معاہدے پر اپریل 2015 میں دستخط کئے گئے۔اس وقت طے پایا تھا کہ یہ منصوبہ25دسمبر 2017کو مکمل ہوگا تاہم اس منصوبے کو مقررہ مدت سے7ماہ قبل مکمل کیا گیا۔اس لحاظ سے اس منصوبے نے نہ صرف چین بلکہ دنیا کا ریکارڈ توڑ دیاہے۔وہ ساہیوال میں1320میگاواٹ کے ساہیوال کول پاور پراجیکٹ کی تکمیل پر منعقدہ خصوصی تقریب سے خطاب کررہے تھے۔

وزیراعلی نے کہا کہ آج نہ صرف خوشی کا دن ہے بلکہ ایک تاریخی دن بھی ہے۔وزیراعظم محمد نوازشریف کی قیادت میں توانائی سمیت سی پیک کے دیگر منصوبوں پر بھی انتہائی برق رفتاری سے کام ہورہاہے اور پاکستان میں خوشحالی کا انقلاب آ رہاہے۔وزیراعظم محمدنوازشریف نے پاک چین دوستی کو مضبوط سے مضبوط تر بنانے میں بہت اہم کردار ادا کیاہے تاہم بعض عناصر جو باہر سے تو پاک چین دوستی کا دم بھرتے ہیں لیکن اندر سے اس کی مخالفت کر رہے تھے۔

انہوں نے سی پیک کے منصوبوں کے بارے میں منفی پراپیگنڈہ کرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی۔ہمارے مخالفین اور ناقدین کہتے تھے کہ یہ منصوبے عملی شکل اختیار نہیں کریں گے لیکن اللہ تعالی کے فضل وکرم سے سی پیک کا میگا منصوبہ آج 1320میگا واٹ بجلی نیشنل گرڈ کو فراہم کررہاہے ۔انہوں نے کہاکہ چین کے صدر شی جن پنگ نے 2014میں پاکستان آنا تھا لیکن اس وقت بد قسمتی سے دھرنے دئیے گئے۔ میں خوداس بات کا عینی شاہد ہوں کہ دھرنے والوں کوکہاگیا کہ ہمارے انتہائی قابل اعتماد دوست چین کے صدر آرہے ہیں آپ چند روز کے لئے یہاں سے ہٹ جائیں ،سیاسی وعسکری قیادت نے بھی اس ضمن میں بڑی کوشش کی لیکن دھرنے والے اپنی ہٹ دھرمی پر قائم رہے اور انہوں نے جگہ چھوڑنے سے انکار کردیا ۔دھرنا دینے والے حقیقت میں پاکستان کے مستقبل کو اندھیروں میں دھکیلنا چاہتے تھے او رچینی صدر کا دورہ ملتوی ہوا ،وزیراعلی نے کہا کہ چین کے صدر اور نیشنل انرجی ایڈمنسٹریشن کے ایڈمنسٹریٹر نور بیکری پاکستان میں چھائے اندھیروں کو ختم کرنے کے لئے آتے ہیں ۔ چین کے صدر، وزیراعظم اوردیگر قیادت کو وزیراعظم محمد نوازشریف کی لیڈر شپ پر بھر پور اعتماد ہے او ریہ پاکستان کے عوام کے ساتھ والہانہ محبت کرتے ہیں۔چین نے ایسے وقت میں پاکستان کا ہاتھ تھاما جب ملک میں بجلی کے ا ندھیرے چھائے ہوئے تھے، معیشت خراب تھی او رکاروبار نہیں ہورہاتھا۔چینی قیادت نے اپنے عوام کے خون پسینے کی کمائی سے 60ارب ڈالر کے منصوبے پاکستان کودئیے۔پاکستانی قوم اس احسان عظیم کو کبھی فراموش نہیں کرسکے گی۔ انہوں نے کہاکہ ساہیوال کول پاور پراجیکٹ کے 22ماہ میں مکمل ہونے سے آنے والے وقتوں میں اربوں ڈالر کا فائدہ ہوگا۔بہاولپور میں 300میگا واٹ کا شمسی توانائی کا منصوبہ نیشنل گرڈ کو بجلی فراہم کررہاہے۔اس طرح پورٹ قاسم میں بھی کول پاور پلانٹ لگایا جا رہاہے۔

چین نے سی پیک کے تحت 36ارب ڈالر توانائی کے منصوبوں کے لئے رکھے ہیں جو پاکستان کے زرمبادلہ کے ذخائر سے زیادہ ہیں،اگر ہم اپنا زر مبادلہ ان منصوبوں کے لئے استعمال کرتے تو وہ ختم ہوجانا تھا۔چین کا یہ عظیم احسان پوری قوم نہیں بھولے گی۔وزیراعلی نے کہاکہ پانامہ ہو یا بے نامہ ،پاکستان ترقی کرتا رہے گا۔وزیراعظم محمدنوازشریف کی قیادت میں پاکستان آگے بڑھتا جائے گا۔دھرنوں اور لاک ڈاؤن کے باوجود آج منصوبے مکمل کئے جا رہے ہیں۔دھرنے ہوں یا لاک ڈاؤن پاکستان کی تعمیر وترقی کے منصوبے مکمل کرتے جائیں گے۔ پاکستان اپنی منزل کی جانب رواں دواں ہوچکا ہے۔20کروڑ عوام اس منزل کو کھوٹہ نہیں ہونے دیں گے ۔عوام نے ماضی میں بھی دھرنوں اور لاک ڈاؤن کو ناکام کیا او راب بھی ناکام کریں گے او رپاکستان کی ترقی وخوشحالی کے سفر کو آگے بڑھائیں گے۔انہوں نے کہاکہ ماضی کی حکومتوں نے ملک کی تعمیر و ترقی اور توانائی کے منصوبوں میں کرپشن ،بدانتظامی او راقربا پروری کر کے پاکستان کی جڑوں کو کھوکھلا کیا ہے۔ 80ارب روپے کا نیلم جہلم کا منصوبہ 500ارب روپے تک پہنچ چکاہے او راس سے 985میگا واٹ بجلی حاصل ہوگی جبکہ 180ارب روپے کے ساہیوال کول پاور پراجیکٹ سے 1320میگا واٹ بجلی حاصل ہو رہی ہے ،اسی طرح نندی پور کا منصوبہ بھی لوٹ مار اور کرپشن کی بد ترین مثال ہے۔

انہوں نے کہاکہ وزیراعظم محمد نوازشریف کی قیادت میں آج روشنی پھیل رہی ہے اور پاکستان کے عوام کو انہی روشنیوں کے سفر کی تلاش تھی۔ساہیوال کول پاور پراجیکٹ بھی پوری قوم کے لئے ایک تحفہ ہے۔یہ محنت، دیانت، امانت اور عظیم دوستی کا سفر ہے۔ پاکستان او رچین کی دوستی بے مثال ہے ،یہ دوستی پیار او رمحبت کی ہے،یہ دوستی کسی شرط کے بغیر ہے۔چین نے 1965اور 71کی جنگ میں بغیر کسی شرط کے پاکستان کا ساتھ دیا۔اقوام متحدہ میں ہمیشہ مسئلہ کشمیر کی حمایت کی۔عالمی فورمز پر بھی چین پاکستان کے ساتھ کھڑا رہاہے ۔چین پاکستان کے دشمن کے سامنے بھی سیسہ پلائی ہوئی دیوا ر کی طرح کھڑا رہاہے ،جو عناصر الزام لگاتے ہیں کہ سی پیک کے لئے چین نے شرائط عائد کی ہیں وہ پاکستان کے دشمن ہیں او رپاکستان کا بھلا نہیں چاہتے۔چین نے سی پیک بغیر کسی شرط کے پاکستان کو دیا ہے اور دوستی کا عظیم حق ادا کیا ہے۔سی پیک پہلے ہی دشمن کو بہت کھٹک رہاہے اور سی پیک نے پہلے ہی بہت دشمن بنا دئیے ہیں لیکن دشمن سن لیں پاکستان ایٹمی طاقت ہے،پاکستان کے دشمن ہمارا بال بیکا نہیں کرسکتے ۔عوام پاکستان کی جانب میلی آنکھ سے دیکھنے والے دشمن کی آنکھیں نکال کر پاؤں تلے روند دیں گے ۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کو ترقی اور خوشحالی کی منزل محنت، دیانت،امانت پر عمل کرنے سے ہی حاصل ہوگی۔چین کی قیادت تسلیم کرچکی ہے کہ پاکستان کی قوم ایک عظیم قوم ہے ۔وزیراعلی نے 1320میگا واٹ کے ساہیوال کول پاور پراجیکٹ کی تکمیل پر چین کے صدر،چین کے وزیراعظم ، چینی قیادت ،نیشنل انرجی ایڈمنسٹریشن کے ایڈمنسٹریٹر نور بیکری ،این ڈی آر سی ،آئی سی بی سی ،ہیوانگ گروپ ،رویائی گروپ، اور دیگر متعلقہ حکام کا شکریہ ادا کیا۔این ڈی آر سی کے وائس چیئرمین اور نیشنل انرجی ایڈمنسٹریشن کے ایڈمنسٹریٹر نور بیکری،چین کے سفیر سن ویڈانگ ، ہیوانگ گروپ چائنہ کے چیئرمین چاہو پگسی ، صوبائی وزراء ،چیف سیکرٹری ، اور معززین علاقہ کی بڑی تعداد بھی اس موقع پر موجود تھی۔ قبل ازیں وزیراعلی پنجاب محمد شہبازشریف ساہیوال پہنچے اور انہوں نے 1320میگاواٹ کے ساہیوال کول پاو ر پلانٹ کا معائنہ کیا ۔وزیراعلیٰ نے مکمل ہونے والے اس منصوبے کے مختلف حصے دیکھے اور وزیراعلیٰ نے چینی حکام کے ہمراہ کوئلے کی ترسیل کے عمل کا معائنہ کیا ۔

چین کے سفیر سن ویڈانگ،نیشنل انرجی ایڈمنسٹریشن کے ایڈمنسٹریٹر و وائس چےئرمین این ڈی آر سی چائنہ نور بیکری ، اورچینی کمپنی کے اعلی حکام بھی اس موقع پر موجود تھے ۔ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے 1320 میگاواٹ کے ساہیوال کول پاور پراجیکٹ کی تکمیل کا افتتاح بھی کیا اور مرکزی کنٹرول روم کا معائنہ کیا۔وزیراعلیٰ نے منصوبے پر کام کرنے والے ورکرز اورانجینئرز سے ملاقات کی اور ان سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آپ نے قومی خدمت کر کے ایک مثالی کارنامہ سرانجام دیا ہے ۔ پاکستان کی تاریخ میں اس منصوبے پر کام کرنے والے ورکرز اورانجینئرز کا نام ہمیشہ یادر کھاجائے گا۔انہوں نے کہاکہ 22ماہ کی ریکارڈ مدت میں 1320میگاواٹ کے کول پاورپلانٹ کے منصوبے کی تکمیل ایک بڑا سنگ میل ہے اورمنصوبے سے مجموعی طور پر 1320 میگاواٹ بجلی نیشنل گرڈ میں شامل ہو رہی ہے۔انہوں نے کہاکہ سی پیک کے تحت پاکستان میں تعمیر ہونے والا یہ پہلا منصوبہ ہے۔ یہ منصوبہ محنت، دیانت اور شفافیت کی اپنی مثال آپ ہے۔نیشنل انرجی ایڈمنسٹریشن کے ایڈمنسٹریٹر و وائس چےئرمین این ڈی آر سی چائنہ نور بیکری ،چین کے سفیر سن ویڈانگ،وزیرمملکت پانی و بجلی عابد شیر علی اورمنصوبے پر کام کرنے والے چائنہ ہیوانگ گروپ کے چیئرمین چاؤ پگسی اوردیگر حکام بھی اس موقع پر موجود تھے ۔

مزید : لاہور