حافظ نعیم الرحمن کا قاری عثمان کے ہمراہ پاک کالونی کا دورہ

حافظ نعیم الرحمن کا قاری عثمان کے ہمراہ پاک کالونی کا دورہ

کراچی (اسٹاف رپورٹر)امیر جماعت اسلامی کراچی و متحدہ مجلس عمل کراچی کے امیدوار این اے 250حافظ نعیم ا لرحمن نے جمعیت علمائے اسلام اور مجلس عمل کے رہنما ، نامزد امیدوار پی ایس 114 قاری عثمان کے ہمراہ اپنے حلقہ انتخاب کے علاقے پاک کالونی اور اس سے متصل آبادیوں اور لیبر اسکوائر بلدیہ ٹاؤن کا دورہ کیا۔ مساجد اور علاقے کی مارکیٹوں ، بازاروں اور رہائشی علاقوں میں مکینوں اور ووٹرز سے ملاقاتیں کیں اور متعدد کارنر میٹنگز سے بھی خطاب کیا۔ اس مو قع پر سابق رکن سندھ اسمبلی حمید اللہ ایڈوکیٹ ، ناظم علاقہ شوکت علی مجاہد اور دیگر بھی موجود تھے۔ کارنر میٹنگ میں خواتین نے بھی شر کت کی۔ کارنر میٹنگ سے خطاب کر تے ہوئے حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ پاک کالونی کے عوام نے کئی بار ایم کیو ایم کے نمائندوں کو ووٹ دیئے اور آج وہ خود سب سے زیادہ بہتر جانتے ہیں کہ ایم کیو ایم نے ان کے مسائل حل نہیں کیے اور عوام کے ساتھ بے وفائی کی۔ پاک کالونی میں بجلی اور پانی کا شدید بحران ہے۔ کئی کئی ہفتوں پانی نہیں آتا اور روزانہ آٹھ سے دس گھنٹے بجلی غائب رہتی ہے۔ علاقے کا پانی فیکٹریوں کو دیا جاتا ہے۔ہم صنعت و تجارت کی ترقی کے مخالف ہر گز نہیں۔ صنعتوں کو چلنا چاہیئے لیکن پانی کی تقسیم کا ایسا نظام وضع کیا جائے جس سے فیکٹریوں کو بھی پانی ملے اور عوام کی بھی پانی جیسی بنیادی ضرورت پوری ہو سکے۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ کراچی سیاسی تحریکوں کا مرکز اور محور رہا ہے لیکن ایک سازش کے تحت کراچی کا تشخص ختم کیا گیا اور بند گلی میں دھکیل دیا گیا۔ قاری عثمان نے کہا کہ ہمارا ملک سیکولر یا لبرل ہر گز نہیں ہے اور نہ ہم اسے سیکولر اور لبرل بنانے دیں گے۔ جب دینی جماعتوں کے نمائندے پارلیمنٹ میں ہوں گے تو اللہ تعالی اور اس کے رسول ? کی شریعت کے خلاف کوئی قانون سازی نہیں ہو سکے گی۔ مجلس عمل ہو گی تو مسجد میں بھی اسلام ہو گا اور پارلیمنٹ اور قومی اداروں میں بھی اسلام ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ کراچی روشنیوں اور اخوت و محبت کا شہر تھا لیکن اسے قتل و غارت گری ، بھتہ خوری اور ظلم و فساد کا شہر بنا دیا گیا۔ عوام ایسا کر نے والوں کو مسترد کر دیں۔ کراچی کی تعمیر و ترقی کو ووٹ دیں اور 25جولائی کو کتاب کے نشان پر مہر لگائیں

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر