معیشت جام 20جولائی کے بعد بہت کچھ تبدیل ہونیوالا ہے ،جاوید ہاشمی

  معیشت جام 20جولائی کے بعد بہت کچھ تبدیل ہونیوالا ہے ،جاوید ہاشمی

ملتان ( نیوز رپورٹر) سینئر سیاستدان جاوید ہاشمی نے کہا ہے کہ سیاسی استحکام کے بغیرمعاشی استحکام ناممکن ہے اورمعیشت اس (بقیہ نمبر46صفحہ12پر )

قدرجام ہوکررہ گئی ہے کہ اداروں کی تنخواہیں دینا بھی مشکل ہوتا جارہا ہے، حالات اس قدرخراب ہوچکے ہیں کہ ملک میں کسی بھی وقت خانہ جنگی ہوسکتی ہے، سیاستدان باہرنہ بھی نکلے تومہنگائی کے ستائے عوام خود سڑکوں پرہوں گے جس سے ملکی سلامتی شدید خطرے میں پڑسکتی ہے رانا ثنا اللہ پربنایا گیا کیس عمران خان یا اس کے اردگرد والے لوگوں کی حکومت کیخلاف بڑی سازش ہے، رانا ثنا اللہ سمیت مجھ پرمشرف دور میں اس قدروحشیانہ اورظالمانہ تشدد کیا گیاجسے ہم بیان بھی نہیں کرسکتے، اے پی سی کا مطالب تمام سیاسی جماعتوں کواکٹھا کرنا ہوتا ہے، بیس جولائی کے بعد بہت کچھ تبدیل ہونے والا ہے، ان خیالات کا اظہارانہوں نے اپنی رہائش گاہ پرپریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا، انہوں نے مزید کہا کہ کبھی ایسا نہیں ھوا کہ اتنی بڑی مقدار میں منشیات پکڑی جاے اور ملزم کو فوراً ھی جیل بھیج دیا جاے، رانا ثناء پر تیس چالیس کڑور کی ہیروین ڈالی گئی، ایسے لگتا ہے کہ انھوں نے رانا ثناء پر کیس بنانا تھا، حکومت رانا ثناء کی سیاسی سرگرمیاں روکنا چاہتی ہے، حکومت بوکھلاہٹ کا شکار ہے، معیشت ٹھپ ھو گئی ھے ۔ معیشت سمیت ہرچیز کو بریک لگ گئی ھے، سیاسی جماعتوں میں خریداری کا عمل شروع ہو چکا ہے، عمران خان اراکین اسمبلی کو خرید رہے ہیں ،کیا اراکین اسمبلی حکومت کی کارکردگی سے خوش ہو کر جا رہے ہیں ، ڈر لگتا ہے کہ لوگ حکمرانوں کا سڑکوں پر احتساب نہ شروع کر دیں ،جاوید ہاشمی نے کہا کہ عمران خان پر 60 ارب ڈالر کی ا نگلیاں اٹھ رھی ھیں ۔ کب تک چھپاؤ گے، اب دھرنا نہیں ھوگا بلکہ مرنا ھو گا، جن لوگوں سے ہم امداد کی بھیک مانگتے ہیں اگروہ حکمران یہ کہہ دیں کہ نوازشریف کوچھوڑدو کیا حکومت میں اتنا دم ہے کہ وہ نوازشریف کو نہ چھوڑیں ، انہوں نے تونوازشریف کی گھرکی روٹی بھی بند کردی ہے، حکمران انتقام میں اندھے ہوچکے ہیں ، معیشت ان سے نہیں سنبھل رہی وہ پکڑدھکڑ میں لگے ہوئے ہیں ، انہوں نے کہا کہ پلی بارگین کا مطلب ہوتا ہے کہ کرپشن مان لی، پھرعمران خان کیسے این آراو کی بات کرتے ہیں ، انہوں نے کہا کہ میرے گھرکی بھی تلاشی لے لیں کہیں کل میرے اوپرالزام نہ لگادیں کہ میں بنی گالہ سے کوکین لیکرمخدوم رشید جارہا تھا، ھاشمی نے کہا کہ یہ حکومت خودبھی مرے گی اور عوام سمیت اداروں کا بھی حشر نشر کرے گی ۔ اگر اسی رفتار سے مہنگائی بڑھتی رھی تو عوام حکومتی اراکین اسمبلی کو سڑکوں پر گھسیٹیں گے ۔ انتقامی احتساب سے سیاسی ومعاشی عدم استحکام پیدا ھو گا جس افراتفری بڑھے گی ۔ سب سیکریٹریٹ تو کیا انہوں نے جنوبی پنجاب کے نام پر سابقہ مراعات بھی وآپس لے لی ھیں ۔ علیحدہ صوبے کے نام پر دھوکہ کیا گیا ہے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر