پشاور،جی ایچ اے کی جانب سے ہسپتالوں نجکاری مسترد

پشاور،جی ایچ اے کی جانب سے ہسپتالوں نجکاری مسترد

پشاور(سٹی رپورٹر)گرینڈ ہیلتھ الائنس (جی ایچ اے)نے ریجنل ہیلتھ اتھارٹی اور ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی کے ذریعے ہسپتالوں کی نجکاری کو یکسر مسترد کر دیا ہے اور حکومت کی طرف سے کئے گئے وعدوں کی تکمیل سے انکار سمیت ڈاکٹروں اور نرسز کو سیاسی انتقام کا نشانہ بنانے کی پر زور مذمت کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ ایم ٹی آئی ایکٹ پر تمام تحفظات اور دیگر مسائل ایک ہفتہ کے اندر حل کئے جائے بصورت دیگر گرینڈ ہیلتھ الائنس صوبے بھر میں صحت کے نظام کو جام کر دینگے۔ گزشتہ روز پشاور پریس کلب میں ا لائنس کے چیئرمین ڈاکٹر سراج الاسلام،صدر روہیدار شاہ،جنرل سیکرٹری قاضی نعیم اور عدنان ایس وی پی نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ شکل میں ار ایچ اے اور ڈی ایچ اے ایک کالا قانون ہے جو کسی صورت قبول نہیں۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ کیساتھ میں وعدہ کیا گیا تھا کہ ار ایچ اے اور ڈی ایچ اے پر تمام تحفظات دور کئے جائینگے جبکہ اس قانون میں ترمیم کی جائے گی مگر حکومت نے نے دی گئی ڈیڈلائن کے مطابق وعدوں کی پاسداری نہیں کی جو افسوس ناک امرہے۔انہوں نے کہا کہ ہسپتالوں کی نجکاری کر کے حکومت صحت کے نظام کو تباہ کرنا چاہتی ے اور ہسپتالوں میں ایل ار ایچ اے ہسپتال میں ڈاکٹرز اور نرسز کو سیاسی انتقام کا نشانہ بنا کر حکومت دبانا چاہتی ہے، حکومت کی طرف سے تبادلوں کے حوالے سے جو معاملات طے پائے تھے ان پر بھی عمل درآمد نہیں ہوسکا جبکہ نوشیروان برکی کیخلاف سپریم کورٹ کے فیصلوں کو حکومت نظر انداز کر رہی ہے اور ایم ٹی ائی ایکٹ کو لاگو کر کے صوبے کے غریب عوام سے سستی علاج چھینا چاہتی ہے۔انہوں نے کہا کہ ڈاکٹر ضیاء الدین کے کیس میں ڈی ایس پی اورصو با ئی وز یر صحت کیخلاف کارروائی نہیں ہوئی جس سے پتہ چلتا ہے کہ حکومت ملوث افراد کی پشت پناہی ک ر ہی ہے۔انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ آر ایچ اے اور ڈی ایچ اے کے قانون کو کسی صورت نافذ نہیں کر نے د ینگے کیونکہ ڈاکٹر ضیاء الدین تشدد کیس میں ڈی ایس پی اوروزیر صحت کیخلاف کارروائی کی جائے،ایل ار ایچ کے متعلق عدالتی فیصلوں پر عمل درآمد کیا جائے اور وزیر اعلیٰ کی طرف سے کئے ہوئے وعدوں کے تکمیل کی جائے بصورت دیگر ایک ہفتہ کے بعد صوبے بھر کے تمام ہسپتالوں کو بند کر کے غیر معینہ مدت کیلئے ہڑتال کرینگے۔ واضح رہے کہ گرینڈ ہیلتھ الائنس میں پیرامیڈیکس،ایپکا،لیڈی ہیلتھ ورکرز،درجہ چہارم،ائی ٹی،اورڈاکٹر زکونسل کی تمام تنظیمیں شامل ہیں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر