نوشہرہ، جنر ل سیلز ٹیکس کے ظالمانہ نفاذ کیخلاف ماربل انڈسٹریز کو تالے 

نوشہرہ، جنر ل سیلز ٹیکس کے ظالمانہ نفاذ کیخلاف ماربل انڈسٹریز کو تالے 

نوشہرہ (بیورورپورٹ) وفاقی حکومت کا ماربل انڈسٹریزمالکان پر مزید ظالمانہ جنرل سیلز ٹیکس کے نفاذ کے خلاف ماربل انڈسٹریز مالکان نے کارخانوں کو تالے لگا دیئے نوشہرہ کی ماربل انڈسٹریز میں کام کرنے والے سینکڑوں مزدور بیروز گار ہو کر ان کے گھروں کے چو لھے ٹھنڈے پڑ گئے مزدوروں کے بچے فاقہ کشوں پر مجبور موجودہ ظالم وفاقی حکومت کو مزدوروں اور انکے بچوں کی بد دعائیں جب تک ظالمانہ جنرل سیلز ٹیکس کا ٖیصلہ واپس نہیں لیا جاتا اس وقت تک ماربل کارخانے بند رہیں گے ماربل انڈسٹریز لالکان کو کوئی بنیادی سہولت میسر نہیں لیکن اس کے باوجود اپنے حصے کے ٹیکسیز ادا کر رہے ہیں عمران خان ٹیکسیز یورپ کے طرز پر لگا رہے ہیں لیکن سہولیات یورپی ممالک کے طرز پر دیں خیبر پختونخواہ کی 85%حصہ فری ٹیکس زون قرار دیا گیا ہے جبکہ 15%حصے پر ظالمانہ جنرل سیلز ٹیکس کی نفاذ سے ہماری انڈسٹریز کی ماربل کا کوئی خریدار نہیں رہے گا کیونکہ ان علاقوں میں کارخانہ مالکان اپنا مال ارزاں نرخوں پر ماربل فروخت کریں گے جس کی وجہ سے ہماری ماربل کی صنعت مکمل تباہ ہو جائے گا  ان خیالات کا اظہار رسالپور انڈسٹریل ایریا کے صدر اشفاق پراچہ، سینئر نائب صدر امان اللہ،عماد الدین، حاجی لقمان، عارف درانی وحید اختر، شوکت، جہانگیر، شعیب، اور حاجی افتاب نے موٹر وئے چوک رشکئی میں ماربل انڈسٹری مالکان کے احتجاجی مظاہرے اور میڈیا سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ ماربل انڈسٹری پاکستان کی معیشت میں ریڑ ھ کی ہڈی کی سی حیثیت رکھتی ہے اور ماربل انڈسٹری مالکان نے ہمیشہ اپنے حصے کا ٹیکس بروقت ادا کی ہے اور اب جائز ٹیکس ادا کرنے کو تیار ہیں لیکن جگا ٹیکس دینے کو تیار نہیں انہوں نے کہا کہ ٹیکسز ادا کرنے کی باوجود ماربل انڈسٹریز رسالپور میں بجلی، پانی اور گیس کے ناروا لوڈشیڈنگ سمیت دیگر اہم بنیادی سہولیات سے محروم ہے جیسا کہ رسالپور انڈسٹریل سٹیٹ کی سڑکیں ٹوٹ پھوٹ کی شکار ہو کر کھنڈرات کی سی منظر پیش کر رہی ہے انہوں نے کہا کہ اگر نئے پاکستان میں ہم سے روزگار چھین کر بیروزگار کیا جارہا ہے تو پھر ہمیں نیا نہیں پراناپاکستان قبول ہے انہوں نے کہا ہے کہ پاکستانی قوم کا حافظہ اتنا کمزور نہیں کہ موجودہ حکومت سابقہ حکومت پر الزام لگا رہی ہے کہ پپاکستان پر قرضے ڈبل ہو رہے ہیں حالانکہ موجودہ حکومت کی ناقص پالیسیوں کی وجہ سے ڈالر کی قیمت بڑھنے سے حکومت پر قرضے بھی بڑھ گئے ہیں انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ خیبر پختونخواہ محمود خان کی یقین دہانی سے لگائے گئے ظالمانہ جنرل سیلز ٹیکس کا مسلہ حل ہو جائے گا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر