پاکستان،بنگلہ دیش نئی دوستی کا آغاز کریں،پاکستانی سابق سفیر اکبر احمد

پاکستان،بنگلہ دیش نئی دوستی کا آغاز کریں،پاکستانی سابق سفیر اکبر احمد

واشنگٹن (بیورو رپورٹ) پاکستان اور بنگلہ دیش کو چاہئے کہ وہ ماضی کا درد بھلا دیں اور مفاہمت اور مصالحت کی طرف بڑھتے ہوئے نئی دوستی کا آغاز کریں۔ یہ مشورہ پاکستان کے سابق سفیر اکبر احمد نے وائس آف امریکہ کی بنگلہ سروس کو ایک خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے دیا۔ وہ 1971ء کی خانہ جنگی کے دوران بنگلہ دیش میں تعینات تھے اور طویل عرصہ تک پاکستان کیلئے سفارتی خدمات انجام دیتے رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ جب مشرقی پاکستان الگ ہوا اور وہاں بنگلہ دیش کے نام سے نیا ملک بن گیا تو وہ اپنی اہلیہ کے ہمراہ پاکستان آگئے۔ اس وقت کے مشاہدات کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ تب انہیں احساس ہوا کہ پاکستان کے اس حصے میں عوام کا اس خانہ جنگی کے بارے میں علم بہت محدود تھا اور عام آدمی مشرقی پاکستان کے صوبے اور وہاں کے لوگوں کی اہمیت سے آگاہ نہ تھا۔ سفیر اکبراحمد نے پاکستان اور بنگلہ دیش دونوں سے مطالبہ کیا کہ وہ ایک دوسرے کو سمجھنے کی کوشش کریں اور ماضی کو بھلا کر ایک دوسرے کے عوام کو قریب لانے کی کوشش کریں۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ ماضی کی تلخلیاں بھلا کر دونوں ممالک کے عوام کے درمیان تعلقات کا نیا پل تعمیر کیا جائے۔

اکبر احمد

مزید : صفحہ اول