پٹرول بحران کیخلاف درخواستوں پر فریقین کو نوٹس جاری

پٹرول بحران کیخلاف درخواستوں پر فریقین کو نوٹس جاری

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے پیٹرول بحران پر جوڈیشل کمیشن بنانے اور پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف الگ الگ درخواستوں پر فریقین کو نوٹس جاری کر تے ہوئے جواب طلب کرلیاہے،چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ مسٹر جسٹس محمد قاسم خان نے جوڈیشل ایکٹوازم پینل اور شبیر حسین ایڈووکیٹ کی درخواستوں پر سماعت کی، جوڈیشل ایکٹو ازم پینل کے سربراہ اظہر صدیق ایڈووکیٹ نے اپنی درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ وزئراعظم عمران خان کو پیٹرول بحران پر انکوائری کمیشن بنانے کیلئے چٹھی لکھی لیکن وفاقی حکومت نے چٹھی موصول ہونے کے بعد عجلت میں پیٹرول کی قیمتوں میں 25 روپے اضافہ کر دیا،وفاقی حکومت نے پیٹرول بحران کی تحقیقات کروانے کی بجائے قیمتوں میں اضافہ کر کے آئین میں دیئے گئے شہریوں کے حقوق کو پامالی ہے،دوسری درخواست میں درخواست گزارشبیرحسین ایڈووکیٹ نے نشاندہی کی ہے کہ عدالت کے نوٹس لینے کے باجود وفاقی حکومت نے پیٹرول کی قیمت 74 روپے سے بڑھا کر 100 روپے سے زائد کر دی، وکیل نے نکتہ اٹھایا ہے کہ وفاقی حکومت کا پیٹرول کی قیمت بڑھانے کا نوٹیفکیشن نہ صرف غیر قانونی بلکہ توہین عدالت کے زمرے میں بھی آتا ہے،عدالت نے درخواستوں پر متعلقہ حکام کو نوٹس جاری کرتے ہوئے آئندہ سماعت پر جواب طلب کرلیاہے،دوران سماعت چیف جسٹس نے درخواست گزاروں کے وکلاء سے ازراہ تفنن کہا کہ یہ ساری درخواستیں عدالتی تعطیلات کے دوران دائر ہوئیں، آپ لوگ میرے چیف جسٹس بننے کا انتظار کررہے تھے؟ جس پر وکلاء نے کہا سر آپ بہت اچھا کام کررہے ہیں۔

پٹرول بحران

مزید :

صفحہ آخر -