الیکشن کمیشن کا ضلعی دفاترکیلئے صوبائی حکومتوں سے زمین لینے کا فیصلہ

  الیکشن کمیشن کا ضلعی دفاترکیلئے صوبائی حکومتوں سے زمین لینے کا فیصلہ

  

اسلام آباد(آن لائن) الیکشن کمیشن آف پاکستان نے پورے ملک میں ضلعی اور ریجنل دفاتر کے لیے صوبائی حکومتوں سے زمین حاصل کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے،چاروں صوبائی الیکشن کمشنرز کو زمینوں کے حصول کے لیے مراسلے ارسال کر دئیے گئے ہیں۔ اس سلسلے میں الیکشن کمیشن ہیڈ کوآرٹر کی جانب سے تمام صوبائی الیکشن کمشنرز کو مراسلہ ارسال کہاگیاہے جس میں ہدایت کی گئی ہے کہ تمام ریجنل اور ضلعی الیکشن کمیشن کے دفاتر کیلئے پلاٹس کی خریداری کیلئے مناسب جگہیں تلاش کرنے کے بعد صوبائی حکومتیں سے پلاٹ حاصل کرنے کے لیے بات چیت کی جائیگی۔ ذرائع کے مطابق اس وقت الیکشن کمیشن کے 160 میں سے 156 دفاتر کرائے کی عمارتوں میں قائم کئے گئے ہیں اور صرف الیکشن کمیشن ہیڈ کوارٹرز،دو صوبائی الیکشن کمشنرز اور ایک ضلعی الیکشن کمشنر کا دفتر اپنی عمارتوں پر قائم ہے۔ذرائع کے مطابق اپنی عمارتوں میں دفاترنہ ہونے کی وجہ سے انتخابی مواد کی سٹوریج میں الیکشن کمیشن کے فیلڈ سٹاف کو دشواری کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ملک بھر میں ضلعی ریجنل اور صوبائی الیکشن کمشنرز کے دفاتر اور انتخابی مواد سٹور کرنے کیلئے سٹرانگ رومز بنائے جائینگے۔واضح رہے کہ مستقل دفاتر بنانے کے فیصلے سے نہ صرف الیکشن کمیشن فیلڈ سٹاف کا دیرینہ مطالبہ پورا ہوگیا ہے۔ دوسری جانب اپنے دفاتر نہ ہونے سے الیکشن کمیشن ماہانہ کروڑوں روپے کی رقم کرائے کے مد میں ادائیگیوں کا سلسلہ بھی منقطع ہو جائے گا۔

الیکشن کمیشن دفاتر

مزید :

صفحہ آخر -