کشمیر میں نواسے کے سامنے نانان کی شہادت، عالمی تنظیمیں شرم سے ڈوب مریں: سراج الحق

    کشمیر میں نواسے کے سامنے نانان کی شہادت، عالمی تنظیمیں شرم سے ڈوب مریں: ...

  

لاہور (آن لائن) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ ساٹھ سالہ شخص کی اس کے تین سالہ نواسے کے سامنے شہادت پر عالمی اداروں اور انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں کو شرم سے ڈوب مرنا چاہئے۔کشمیر میں انسانیت کی تذلیل ہورہی ہے،بھارتی فوج معصوم کشمیر یوں کا قتل عام کررہی ہے مگر ہماری حکومت ٹک ٹک دیدم دم نہ کشیدم کے مصداق مجرمانہ خاموشی اختیا ر کئے بیٹھے ہیں۔کشمیر میں ظلم و جبر کا جو بازار گرم ہے اس پر عالمی اداروں کا آنکھیں بند کرکے بیٹھے رہنا ظالم کا ساتھ دینے کے مترادف ہے۔کشمیر پاکستان کیلئے زندگی اور موت کا مسئلہ ہے،کشمیر کی آزادی کی جدوجہد کو تیز کرنا ہوگا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے آزاد کشمیر و گلگت بلتستان کے نومنتخب امیر ڈاکٹر خالد محمودکے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کیا۔سینیٹر سراج الحق نے ڈاکٹر خالد محمود کو دوبارہ امیر منتخب ہونے پر استقامت کی دعا اور مبارک باد بھی دی۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ پانچ اگست 2019سے آج تک انڈین آرمی نے کشمیریوں کی تحریک آزادی کو کچلنے کیلئے ہر حربہ استعمال کر لیا۔ریاستی حیثیت ختم کرنے کے ساتھ ساتھ ہزاروں نوجوانوں کو اٹھا کر بھارتی جیلوں اور عقوبت خانوں میں بند کردیااور گزشتہ گیارہ ماہ میں بھارتی فوج نے تین سو سے زیادہ معصوم نوجوانوں کوشہید کردیا ہے،عورتوں کو گھروں سے اٹھا کر ان کی عزتوں کو پامال کیا۔لاکھوں کشمیر ی آزادی کیلئے جانوں کا نذرانہ پیش کرچکے ہیں اور پوری کشمیری قیادت جیلوں میں بند ہے لیکن ہماری حکومت عوام کے جذبات کو ٹھنڈا رکھنے کیلئے تقریروں اور بیانات سے آگے نہیں بڑھ سکی۔

سراج الحق

مزید :

صفحہ آخر -