حکومت سندھ کا افغا ن پناہ گزینوں کا واپس بھیجنے کا مطالبہ

حکومت سندھ کا افغا ن پناہ گزینوں کا واپس بھیجنے کا مطالبہ

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) سندھ حکومت نے مدت پوری ہونے پر وفاق سے افغان پناہ گزینوں کو واپس بھیجنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ وفاق افغان پناہ گزیوں کے قیام کی مدت نہ بڑھائے ان کو اپنے ممالک واپس بھیجے۔ صوبائی وزیر اسماعیل راہو نے اپنے جاری بیان میں کہا کہ سندھ کو پہلے ہی مشکلات کا سامنا ہے۔ افغان پناہ گزینوں کو اسلام آباد یا کے پی میں پناہ دی جائے۔ سندھ کے شہر کراچی میں 25 لاکھ سے زائد غیرقانونی تارکین وطن مختلف علاقوں میں آباد ہیں، جن میں برمی، بہاری، افغانی، بنگالی اور افریقی شامل ہیں۔ انہون نے کہا کہ سندھ کوئی یتیم خانہ نہیں جو باہر سے آئے ہر غیر ملکی کو پناہ دے۔ صوبائی وزیر نے حکومت سے سوال کیا کہ وفاق بتائے کہ اب تک کتنے غیر ملکی تارکین وطن کی رجسٹریشن کرچکا ہے۔ اسماعیل راہو نے کہا کہ نادرا نے کمائی کا ذریعہ بنایا ہوا ہے۔ وفاقی وزیر داخلہ کو کچھ پتا نہیں۔ ایلین قوانین کو مزید فعال بنانے کی ضرورت ہے۔ وفاقی اداروں میں رشوت دے کر کوئی بھی غیر ملکی شہریت حاصل کر لیتا ہے۔ غیر قانونی لوگوں کے معاملے میں نادرا کی کارگردگی منفی ہے۔ انہوں نے کہا کہ زیادہ تر تارکین وطن جرائم میں ملوث ہیں۔ ان کو اپنے ممالک واپس بھیجا جائے۔ غیر قانونی لوگ ہی کراچی میں بدامنی اور بے روزگاری کی بنیادی وجہ ہیں۔ 15 سالوں میں وفاق صرف ڈیڑھ لاکھ کے قریب غیر ملکی تارکین وطن کورجسٹر کر سکا ہے۔ وفاق نے کچھ سال پھلے ڈیٹا بتایا تھا کہ 25 لاکھ افغانی، برمی، بہاری، بنگالی اور بھارتی موجود ہیں۔ انہوں نے کہا کہ افغان پناہ گزینوں کے پاکستان میں آنے سے جرائم میں بے تحاشہ اضافہ ہوا ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -