پروڈکشن، آرڈر جیلوں مین اے بی سی کیٹگری قوانین میں تبدیلی کا فیصلہ، وزارت قانون کو ذمہ داری تفویض

پروڈکشن، آرڈر جیلوں مین اے بی سی کیٹگری قوانین میں تبدیلی کا فیصلہ، وزارت ...

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)وزیر اعظم عمران خان نے پروڈکشن جاری کرنے سے متعلق قوانین پر نظر ثانی کیلئے وزارت قانون کو ذمہ داری سو نپ دی۔ذرائع نے بتایا کہ وزیر اعظم عمرا ن خان نے پارلیمنٹ میں ملزموں کی موجودگی پر تشویش کا اظہار کیا،قومی اسمبلی،سینیٹ اور صوبائی اسمبلیوں کیلئے پروڈکشن آرڈر جاری کرنے کے حوالے سے قوانین میں تبدیلی لا نے کا فیصلہ کیا ہے، اس حوالے سے وزارت قانون کو قوا نین میں تبدیلی و نظر ثانی کیلئے ذمہ داری تفویض کرتے ہوئے ہدایت کی ہے کہ چاروں صوبوں سے مکمل مشاورت کے بعد مشترکہ لائحہ عمل اپنایا جائے۔ذرائع نے مزید بتایا کہ جیلوں میں قید اینٹی کرپشن،منشیات اورمنی لارنڈرنگ کے ملزموں کے کسی صورت پروڈکشن آرڈر جار ی نہیں کئے جائیں گے، قوانین میں تبدیلی کے بعد نیب اور پولیس کی تحویل میں ملزموں کے پارلیمنٹ اور قائمہ کمیٹی کے اجلاسوں میں شرکت کیلئے پرو ڈکشن آرڈر جاری نہیں ہوں گے،ذرائع نے بتایا کہ جیلوں میں اے بی سی کٹیگری پر بھی نظرثانی کر کے قوانین میں تبدیلی کی جائیگی،عام قیدی ہوں یا سیاسی قیدی ہرایک کیلئے صرف ایک ہی قانون لایا جائیگا،جیلوں کیلئے کٹیگری اے اور بی کو ختم کر کے صرف کٹیگری سی کو لاگو کیا جائیگا،اس قانون کے تحت تمام قیدی ایک ہی بیرک میں رہیں گے اور ایک ساتھ ہی کھانا کھائیں گے۔ذرائع نے بتایا کہ وزیر اعظم عمرا ن خان نے واضح کیا ہے کہ پارلیمنٹ میں کریمنل کی موجودگی کسی صورت برداشت نہیں،جمہوریت کو جمہوریت ہی رہنے دیا جا ئے،کرپشن،منشیا ت فروشی کے ملزموں کو جمہوریت کے پیچھے نہیں چھپنے دیں گے۔ذرائع نے بتایا کہ وزیر اعظم پروڈکشن آرڈ ر کے حوالے سے چیئرمین سینٹ،سپیکر قومی اسمبلی اور وزراء سے مشاورت بھی کریں گے جبکہ صوبائی وزراء اور پارٹی رہنماؤں کو اس حوالے سے اعتماد میں لیا جائیگا۔

قوانین تبدیلی فیصلہ

مزید :

صفحہ اول -