صنعتی شعبے کی ترقی کیلئے ویلنگ ماڈل کامیابی کی طرف گامزن ہے،حمایت اللہ خان

صنعتی شعبے کی ترقی کیلئے ویلنگ ماڈل کامیابی کی طرف گامزن ہے،حمایت اللہ خان

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)صوبائی مشیر توانائی حمایت اللہ خان نے کہا ہے کہ توانائی کے منصوبوں میں تاخیرناقابل برداشت ہے۔ بجلی کے خالص منافع کی مد میں صوبے کے اربوں روپے کے بقایاجات کی وصولی کے کیس میں ہمیں ضرورکامیابی ملے گی۔ صنعتی شعبے کی ترقی کے لئے ویلنگ ماڈل کامیابی کی طرف گامزن ہے گزشتہ ماہ جون کے دوران صوبے کو 19کروڑ روپے کی آمدن ہوئی ہے۔صوبے میں ٹرانسمیشن اینڈ گرڈ کمپنی کے بورڈممبرزکی تقرری کاعمل جاری ہے۔ ان خیالات کا اظہارانہوں نے محکمہ توانائی وبرقیات میں توانائی منصوبوں پر کام کی رفتارکے حوالے سے منعقدہ جائزہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں سیکرٹری توانائی محمد زبیرخان،ایڈیشنل سیکرٹری توانائی ظفرالاسلام خٹک،چیف ایگزیکٹوپیڈوانجینئرنعیم خان اورچیف پلاننگ آفیسرمحکمہ توانائی محمد طارق خان نے بھی شرکت کی۔ اجلاس میں مشیرتوانائی کو بریفنگ دیتے ہوئے ایڈیشنل سیکرٹری توانائی ظفرالاسلام خٹک نے آگاہ کیا کہ صوبے میں سب سے بڑے توانائی پراجیکٹ بالاکوٹ ہائیڈروپاورپراجیکٹ300میگاواٹ کوشروع کرنے کیلئے کنسلٹنٹ کی تعیناتی کاعمل جاری ہے جبکہ صوبے کے مزید4منصوبوں کے لئے نئے پراجیکٹ ڈائریکٹرزبھی لئے جارہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ صوبے میں اپنی نوعیت کی قائم پہلی ٹرانسمیشن اینڈ گرڈ کمپنی کے لئے بھی بورڈممبرزاوردیگرلوازمات پورے کئے جارہے ہیں۔ اسی طرح ویلنگ ماڈل کے ذریعے پیہوربجلی گھر کی 18میگاواٹ بجلی صنعتی یونٹس کوارزاں نرخوں پر فروخت کرنے سے حوصلہ افزانتائج برآمد ہورہے ہیں۔رواں ماہ صوبے کو 23کروڑ روپے کی آمدن متوقع ہے۔اجلاس میں بتایاگیا کہ درال خوڑبجلی گھر کے O&Mکی آؤٹ سورسنگ کاعمل بھی جاری ہے جبکہ ویلنگ ماڈل کوتوسیع دیتے ہوئے صوبے کے اپنے تیارکردہ توانائی منصوبوں کواس میں شامل کرنے کی تجاویز بھی زیرغورہیں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -