امریکی شہری سنتھیارچی کو ڈی پورٹ کرنے کامعاملہ، اسلام آباد ہائیکورٹ نے ہدایات جاری کردیں

امریکی شہری سنتھیارچی کو ڈی پورٹ کرنے کامعاملہ، اسلام آباد ہائیکورٹ نے ...
امریکی شہری سنتھیارچی کو ڈی پورٹ کرنے کامعاملہ، اسلام آباد ہائیکورٹ نے ہدایات جاری کردیں

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) اسلام آبادہائی کورٹ نےوزارت داخلہ کوہدایت کی ہے کہ وہ امریکی شہری سنتھیارچی کےخلاف پیپلزپارٹی کی درخواست کافیصلہ کرے۔ 92نیوز کےمطابق پیپلز پارٹی کی درخواست پر سماعت چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کی جب کہ پیپلز پارٹی کی جانب سےسردارلطیف کھوسہ ایڈووکیٹ عدالت کےسامنے پیش ہوئے۔

اس دوران ہائیکورٹ نےکہا ہےکہ وزارت داخلہ قانون کو مدنظر رکھ کر درخواست کا فیصلہ کرےاورفیصلے بعد کاپی عدالت میں جمع کرائے۔

پیپلز پارٹی نے ویزہ کی معیاد ختم ہونے پر سنتھیا رچی کو ڈی پورٹ کرنے کی درخواست دائر کررکھی ہے۔

دوران سماعت چیف جسٹس ہائیکورٹ جسٹس اطہر من اللہ نے استفسار کیا کہ جس کا ویزہ ختم ہو جائے اس کے حوالے سے قانون کیا کہتا ہے؟ کچھ رولز ریگولیشنز ہوں گے ضابطہ اخلاق کیاہے؟

عدالتی استفسار پر ڈپٹی اٹارنی جنرل طیب شاہ نے کہا سنتھیا نے ویزہ میں توسیع کی درخواست دی جو ابھی زیر التوا ہے، سنتھیا ڈی رچی کا بزنس ویزہ دو مارچ کو ختم ہو چکا،کورونا کی وجہ سے حکومت نے غیر ملکیوں کے ویزوں میں توسیع دے دی۔

جوائنٹ سیکرٹری داخلہ نےعدالت کے سامنے بیان دیا کہ ویزہ کی 16 کیٹیگریز ہیں۔96 ممالک کی لسٹ ہے ان کو بزنس فرینڈلی کہتے ہیں۔

اس دوران چیف جسٹس اطہر من اللہ نے پوچھا کہ جن کے ویزوں کی مدت ختم ہو گئی ان کی تعداد کیا ہے؟ جس پر جوائنٹ سیکرٹری نے جواب دیا کہ ابھی معلوم نہیں ہے۔

آپ کیسی بات کر رہے ہیں آپ کو پتہ ہی نہیں۔آپ کیسے مانیٹر کرتے ہیں میکنزم کیا ہے۔

ضابطہ اخلاق کے حوالے سے جوائنٹ سیکرٹری کی جانب سے لاعلمی پر عدالت نےبرہمی کا اظہارکرتے ہوئے کہا کہ لگتا ہے آپ مکمل تیار نہیں یا آپ کو معلومات ہی نہیں۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -