جج ارشد ملک کی برطرفی ،اسحاق ڈار نے وزیر اعظم عمران خان کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے اہم قانونی نکتہ اٹھا دیا 

جج ارشد ملک کی برطرفی ،اسحاق ڈار نے وزیر اعظم عمران خان کو تنقید کا نشانہ ...
جج ارشد ملک کی برطرفی ،اسحاق ڈار نے وزیر اعظم عمران خان کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے اہم قانونی نکتہ اٹھا دیا 

  

لندن(ڈیلی پاکستان آن لائن)لاہور ہائی کورٹ کی جانب سے احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کی برطرفی کے بعد ملک بھر میں ایک نئی بحث کا آغاز ہو گیا ہے،ن لیگی رہنما ارشد ملک کی برطرفی کے بعد ن لیگی رہنما خوشی سے نہال ہیں تو لمبی خاموشی کے بعد مریم نواز نے بھی چپ کا روزہ توڑتے ہوئے ملک میں جاری احتساب پر سوال اٹھاتے ہوئے حکومت کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا ہے ۔ایسے میں لندن میں بیٹھے اسحاق ڈار نے بھی ارشد ملک کی برطرفی پر لب کشائی کرتے ہوئے جہاں وزیر اعظم عمران خان کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے وہیں پر انہوں نے قانونی سوال بھی اٹھا دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ پر ٹویٹس کرتے ہوئے سابق وزیر خزانہ اور مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما اسحاق ڈار نے کہا ہے کہ""لاہور ہائیکورٹ نے احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کو برطرف کر دیا،انہیں میاں نواز شریف کیس کی سماعت کے دوران مس کنڈکٹ کا الزام ثابت ہونے پر برطرف کیا گیا ہے،کیا اب میاں نواز شریف کے خلاف اس جج کے فیصلوں کی کوئی اہمیت رہ گئی ہے اور کیا یہ فیصلے اب فوری کالعدم قرار نہیں ہو جانے چاہئیں؟"۔اسحاق ڈار نےاس سے قبل اپنے پہلے ٹویٹ میں وزیر اعظم کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ "عمران نیازی صاحب، آپ نے پاکستان کی ٹیکس آمدنی کو جو دوگنا کرنے کا وعدہ کیا تھا، اس میں آپ دو سال میں مکمل فیل ہو چکے ہیں۔

مزید :

برطانیہ -