" ہم نے 14 میں سے 12 ملکوں کے ساتھ بارڈر کا مسئلہ حل کیا اس لیے ۔۔۔ " توسیع پسند ملک قرار دینے پر چین نے مودی کو منہ توڑ جواب دے دیا

" ہم نے 14 میں سے 12 ملکوں کے ساتھ بارڈر کا مسئلہ حل کیا اس لیے ۔۔۔ " توسیع پسند ...

  

بیجنگ (ڈیلی پاکستان آن لائن) بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کی جانب سے چین کو توسیع پسند قوت قرار دیا گیا تو چین نے بھی آگے سے زبردست جواب دے دیا۔

انڈیا میں قائم چینی سفارتخانے کے ترجمان نے بھارتی وزیر اعظم کے بیان پر رد عمل دیتے ہوئے کہا کہ چین نے اپنے 14 میں سے 12 ہمسایہ ممالک کے ساتھ پرامن مذاکرات کے ذریعے سرحدوں کی حد بندی کی ہے اور زمینی بارڈرز کو دوستانہ تعاون میں تبدیل کرکے دکھایا ہے۔ چین کو توسیع پسند قوت قرار دینا بے بنیاد ہے۔

دوسری جانب چینی وزارت خارجہ کے ترجمان لی جیان ژاؤ نے اپنے رد عمل میں کہا ہے کہ چین اور انڈیا فوجی اور سفارتی چینلز کے ذریعے ایک دوسرے کے ساتھ رابطے میں ہیں، کسی بھی فریق کو ایسا کوئی قدم نہیں اٹھانا چاہیے جس سے سرحد کی صورتحال پیچیدہ ہوجائے۔

خیال رہے کہ جمعہ کے روز بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے لداخ کے ضلع لیہ میں اگلی پوسٹوں کا اچانک دورہ کیا تھا۔ فوجی جوانوں سے اپنے خطاب میں نریندر مودی نے نام لیے بغیر چین کو توسیع پسند قوت قرار دیا اور کہا کہ یہ توسیع پسندی کا نہیں ترقی کا زمانہ ہے۔ پچھلی صدی میں جو بھی توسیع پسند قوتیں تھیں انہیں یا تو شکست ہوئی یا تاریخ نے انہیں فراموش کردیا۔

مزید :

بین الاقوامی -