چند لوگوں کی جانب سے جنسی خواہشات قابو میں نہ رکھنے پانے کی وجہ سے آسٹریلیا میں کورونا وائرس کی دوسری لہر آگئی

چند لوگوں کی جانب سے جنسی خواہشات قابو میں نہ رکھنے پانے کی وجہ سے آسٹریلیا ...
چند لوگوں کی جانب سے جنسی خواہشات قابو میں نہ رکھنے پانے کی وجہ سے آسٹریلیا میں کورونا وائرس کی دوسری لہر آگئی

  

کنبرا(مانیٹرنگ ڈیسک) آسٹریلیا میں کورونا وائرس کی دوسری لہر آ گئی ہے جس نے میلبرن شہر کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے اور موذی وباءکی یہ دوسری لہر آنے کی وجہ بھی انتہائی شرمناک بیان کی جا رہی ہے۔ میل آن لائن کے مطابق بتایا گیا ہے کہ میلبرن کے فائیو سٹار ہوٹل ’سٹیمفرڈ پلازا‘ میں قرنطینہ مرکز بنایا گیا تھا جہاں بیرون ملک سے آنے والے سینکڑوں مسافروں کو 14دن کے لیے الگ رکھا جاتا تھا۔

اس ہوٹل کے سکیورٹی گارڈز اس سنٹرمیں بیرون ممالک سے آنے والی خواتین کے ساتھ جنسی تعلق قائم کرتے رہے، جس سے ان مسافر خواتین سے وائرس ان سکیورٹی گارڈز کے ذریعے میلبرن میں پھیل گیا۔ کئی سکیورٹی گارڈز نے تحقیقات میں بیرون ملک سے آنے والی خواتین کے ساتھ جنسی تعلق قائم کرنے کا اعتراف بھی کر لیا ہے۔ اس موذی وباءکی دوسری لہر کا مرکز بننے پر میلبرن میں ایک بار پھر انتہائی سخت لاک ڈاﺅن کر دیا گیا ہے اور لاک ڈاﺅن کی خلاف ورزی پر 1ہزار 625ڈالر (تقریباً 1لاکھ 89ہزار روپے) جرمانے کی سزا رکھی گئی ہے۔ واضح رہے کہ آسٹریلوی ریاست وکٹوریا میں وباءکی اس دوسری لہر میں اب تک 289نئے مریض سامنے آ چکے ہیں جن میں سے بیشتر کا تعلق میلبرن سے ہے۔ گزشتہ روز 77نئے کیس سامنے آئے جو 31مارچ کے بعد بلند ترین تعداد ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -