پنجاب بھر میں گیسٹروں اور چکن پاکس کے ڈیرے، ہسپتال مریضوں سے بھر گئے

  پنجاب بھر میں گیسٹروں اور چکن پاکس کے ڈیرے، ہسپتال مریضوں سے بھر گئے

  

 لاہور(جاوید اقبال) پنجاب بھر میں کورونا اور ڈینگی کے بعدگیسٹرو اور چکن پاکس(لاکڑا کاکڑا) پھیل گیا ہے زیادہ تر شکار بچے اور کم قوت مدافعت رکھنے والے لوگ ہیں۔طبی  ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ وائرل انفیکشن ہے اور یہ ایک شخص سے دوسرے شخص میں ا ٓسانی سے منتقل ہو جاتی ہے جبکہ دوسری طرف آنتوں میں انفیکشن کی بیماری گیسٹرو نے بھی شہر میں ڈیرے ڈال لئے ہیں اس صورتحال کے باعث ہسپتال مریضوں سے بھر گئے ہیں۔بتایا گیا ہے کہ شہر میں چکن پوکس اور گیسٹرو نے ڈیرے ڈال لئے ہیں اس وائرس کے زیادہ تر شکار کم قوت مدافعت والے افراد اور بچے ہو رہے ہیں۔اس حوالے سے سروسز ہسپتال کے شعبہ میڈیسن کے اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹرمحمودالحسن سید کا کہناہے کہ یہ ایک سے دو ہفتے کے درمیان میں ٹھیک ہو جاتی ہے اس سے احتیاط ہی واحد علاج ہے جبکہ اس انفیکشن میں مبتلا افراد کے نزدیک جانے اور ان کے اترے ہوئے کپڑے پہننے سے گریز کرنا چاہئے۔ اس بیماری سے مریض کو خارش اور شدید گرمی لگتی ہے اسے ٹھنڈی جگہ رہنا چاہئے۔دوسری جانب آلودہ پانی سے پیدا ہونے والی بیماری گیسٹرو نے بھی ہزاروں لوگوں کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے اس حوالے سے پروفیسر آف میڈیسن ڈاکٹر عمران سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ یہ موسمی بیماری ہے اور یہ آلودہ پانی سے ہوتی ہے لہذٰا شہریوں کو چاہئے کہ پانی ابال کر پئیں،باسی اوربازاری کھانا کھانے سے پرہیز کریں۔ 

گیسٹرو

مزید :

صفحہ اول -