میرا باپ میرے لئے ہمیشہ ایک پُراسرار ہستی رہا ، میری اُس سے کبھی حقیقی شناسائی نہیں ہوسکی

میرا باپ میرے لئے ہمیشہ ایک پُراسرار ہستی رہا ، میری اُس سے کبھی حقیقی ...
میرا باپ میرے لئے ہمیشہ ایک پُراسرار ہستی رہا ، میری اُس سے کبھی حقیقی شناسائی نہیں ہوسکی

  

مترجم:علی عباس

قسط: 5

مجھے ایک واقعہ یاد آ رہا ہے جو میری ماں کی نیک فطرت کا آئینہ دار ہے۔ میںاُن دنوںواقعتاً کم عمر تھا۔ ایک صبح ایک شخص نے علاقے کا ہر دروازہ کھٹکھٹایا۔ وہ زخمی تھا اور اُس کا خون بہہ رہا تھا۔ پڑوسیوں میں کسی نے اُس کی مدد نہیں کی۔ بالآخر وہ ہمارے گھر تک پہنچ گیا، وہ دروازہ کھٹکھٹانے لگا اور درد سے چلانے لگا۔ ماں اُسے فوری طور پرگھر کے اندر لے آئی، بہت سارے لوگ ایسا کرنے سے گھبرا رہے تھے لیکن وہ میری ماں تھی۔ مجھے یاد ہے کہ میں جاگ گیا تھا اور فرش پر پھیلا ہوا خون دیکھ سکتا تھا۔ میری خواہش ہے کہ ہم سب زیادہ سے زیادہ ماں کی طرح بن سکیں۔

میرے باپ کے حوالے سے میری یادوں کا آغاز اُس دن سے ہوتا ہے جب وہ سٹیل مل سے ایک بھرے ہوئے بیگ کے ہمراہ گھر واپس لوٹا تھا جس میں ہمارے لئے کیک اور بسکٹ رکھے ہوئے تھے۔ میں نے اور بھائیوں نے ملکر کر دعوت اُڑائی، تب وہ بیگ وہاں سے اچانک غائب ہوگیا تھا۔ وہ ہم سب کو سیر کے لئے باغ میں واقع جھولوں پر لیکر جایا کرتا لیکن اُس وقت میری عمر زیادہ نہیں تھی، میں اُن دنوں کی یادوں کو بہتر طریقے سے تازہ نہیں کر سکتا۔

میرا باپ میرے لئے ہمیشہ ایک پُراسرار ہستی رہا ہے اور وہ اس حقیقت سے آگاہ ہے۔ یہ میری زندگی کا وہ حصہ ہے جس کے حوالے سے میں بہت زیادہ افسردہ ہوں کہ میری اُس سے کبھی حقیقی شناسائی نہیں ہوسکی۔ وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ اُس نے اپنے اردگرد ایک ہول بنا لیا ہے اور ایک بار اُس نے گھریلو معاملات کے بارے میں بات چیت کرناتک ترک کر دیا تھا۔ اُسے ادراک ہوا تھا کہ اُس کے لئے ہمارے ساتھ تعلق قائم کرنا مشکل ہے۔ ہم سب کا موقف یکساں تھا اور وہ کمرے سے اُٹھ کرچلا گیا تھا۔ حتیٰ کہ آج بھی اُس کےلئے باپ اور بیٹے کے دوطرفہ تعلق پر بات کرنا مشکل ہے کیونکہ وہ پریشان ہو جاتا ہے، جب میں نے اُس کے اس طرزِ عمل کا مشاہدہ کیا، میں خود بھی بے چین ہو گیا تھا۔

میرے باپ نے ہمیشہ ہمیں تحفظ فراہم کیا ہے اور یہ کوئی معمولی کام نہیں ہے۔ وہ ہمیشہ یہ یقین کرنے کی کوشش کرتا رہا کہ لوگ ہمیں دھوکہ تو نہیں دے رہے۔ اُس نے ہمارے مفادات کا بہتر طریقے سے خیال رکھا۔ اس دوران اُس سے کچھ غلطیاں بھی سرزد ہوئیں لیکن اُس نے ہمیشہ یہ پیشِ نظر رکھا کہ اُس کا عمل اُس کے خاندان کے لئے درست ہے اور یہ واضح ہے کہ میرے باپ نے ہماری کامیابی کے لئے جو کچھ کیا، وہ حیران کُن اور منفرد ہے۔ خاص طور پر اُس نے کمپنیوں اور شوبزنس سے وابستہ لوگوں کے ساتھ روابط استوار کئے۔ میں یہ کہنا چاہوں گا کہ ہم اُن خوش نصیب فنکاروں میں سے ہیں جو بچپن میں شوبز میں کسی پیسے، جائیداد یا سرمایہ کاری کے بغیر داخل ہوئے۔ میرے باپ نے یہ سب کچھ ہمارے لئے کیا۔ اُس نے اپنے اور ہمارے مفادات کا خیال رکھا۔ میں اُس کا شکر گزار ہوں کہ اُس نے ساری دولت اپنے مصرف میںلانے کی کوشش نہیں کی جیسا کہ شوبزنس سے وابستہ بہت سارے بچوں کے والدین کیا کرتے ہیں۔ تصور کریں کہ اپنے ہی بچوں کی دولت چُرا لی جائے، میرے باپ نے ایسا کچھ نہیں کیا۔ لیکن میں تاحال اُس کی شخصیت کے بارے میں واقفیت نہیں رکھتا اور یہ ایک بیٹے کے لئے افسردگی کا باعث ہے جو اپنے باپ کو سمجھنا چاہتا ہے۔ وہ میرے لئے پُراسرار ہستی ہے اور شاید ہمیشہ ہی رہے۔ (جاری ہے ) 

نوٹ : یہ کتاب ” بُک ہوم“ نے شائع کی ہے ۔ ادارے کا مصنف کی آراءسے متفق ہونا ضروری نہیں ۔(جملہ حقوق محفوظ ہیں )۔

مزید :

ادب وثقافت -