پراپرٹی ریٹس میں 85فیصد اضافے سے کاروبار تباہ ہو جائیگا، شٹام ڈیوٹی دوبارہ 1 فیصد کی جائے :ڈیلرزکا مطالبہ

پراپرٹی ریٹس میں 85فیصد اضافے سے کاروبار تباہ ہو جائیگا، شٹام ڈیوٹی دوبارہ 1 ...
پراپرٹی ریٹس میں 85فیصد اضافے سے کاروبار تباہ ہو جائیگا، شٹام ڈیوٹی دوبارہ 1 فیصد کی جائے :ڈیلرزکا مطالبہ

  

لاہور (انٹرویو:میاں اشفاق انجم،تصاویر: ایوب بشیر) پراپرٹی ریٹس میں 85فیصد اضافہ رئیل سٹیٹ کا کاروبار تباہ کرنے کے مترادف ہے 1 کروڑ کے پلاٹ کی رجسٹری کا خرچہ7 لاکھ سے زیادہ کرنا ظلم ہے۔ نان فائلر کیلئے 1 کروڑ کے پلاٹ پر15لاکھ خرچہ زیادتی ہے۔لاہور کے 363 موضع جات کی رہائشی کمرشل زرعی زمین کے ڈی سی اور ایف بی آر ریٹس میں اضافہ مسترد کرتے ہیں۔ شٹام ڈیوٹی 1 فیصد کی جائے، بلڈنگ میٹریل کی قیمتوں میں ہوشربا اضافے نے غریب کےمکان بنانے کو خواب بنا دیا ہے۔بحریہ ٹاؤن کے رہنما آئی بی ایل کے چیئرمین میجر سعید راجپوت، صدر لاہور فیڈریشن طاہر مسعود، صدر ایل ڈی اے ایونیو ون میاں فیاض، صدر ماڈل ٹاؤن ایکسٹینشن میاں لطیف، احسان الرحمن چودھری، چودھری محمد اکبر، بلال منہاس، حق نواز،عاصم فیاض کا ڈی سی اور ایف بی آر ریٹس میں اضافہ پر شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے میجرسعید راجپوت، طاہر مسعود نے حکومتی فیصلے کو کاروبار دشمن فیصلہ قرار دیا ہے۔ میاں فیاض، میاں لطیف نے ڈی سی ریٹس میں اضافہ واپس لینے اور شٹام ڈیوٹی دوبارہ 1 فیصد کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔احسان الرحمن چودھری، چودھری اکبر نے بلڈنگ میٹریل کی قیمتوں میں بے تحاشا اضافہ کو ظلم قرار دیا ہے۔ بلال منہاس اور حق نواز نے گین ٹیکس کی مدت6 سال سے کم کر کے 3 سال کرنے کا مطالبہ کیا۔عاصم فیاض نے کہا رئیل سٹیٹ سیکٹر سے40صنعتیں منسلک ہیں حکومتی فیصلے سے سب بند ہو جائیں گی۔ میجر سعید راجپوت نے اوورسیز پاکستانیوں کے لئے خصوصی پیکیج دینے کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید :

بزنس -