نرسنگ ہسپتالوں میں ریتائرڈ جرنیلوں کو چیف ایگزیکٹو لگانے کا فیصلہ، تیاریاں مکمل

نرسنگ ہسپتالوں میں ریتائرڈ جرنیلوں کو چیف ایگزیکٹو لگانے کا فیصلہ، تیاریاں ...

  

لاہور(جاوید اقبال) صوبہ کے ٹیچنگ ہسپتالوں میں نیا ماڈل متعارف کرانے کے لیے تیاریاں آخری مرحلے میں داخل ہو گئی ہیں ۔اس ماڈل کے تحت ہر ٹیچنگ ہسپتال میں ریٹائرڈ جرنیلوں کو چیف ایگزیکٹو لگانے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔جس کا آغاز پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی لاہور سے کیا جائے گا ۔چونکہ یہ ماڈل قبل ازیں کارڈیک انسٹی ٹیوٹ راولپنڈی میں متعارف کرایا گیا ۔وہاں میجر جنرل (ر) کیانی کو چیف ایگزیکٹو تعینات کیا گیا وہاں پر تجربہ کامیاب رہا ۔ذرائع نے بتایا ہے کہ وہاں میجر جنرل (ر) کیانی کی بطورچیف ایگزیکٹو تعیناتی سے کارڈیک سرجری سمیت پورے ادارے میں معاملات بڑی حد تک بہتر ہو گئے ۔ذرائع نے بتایا ہے کہاس ماڈل کو پی آئی سی میں متعارف کرانے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے ۔اس ماڈل کو پورے صوبہ کے تمام ٹیچنگ ہسپتالوں میں متعارف کرایا جائے گا اور اس ماڈل کے مطابق چیف ایگزیکٹو با اختیار ہو گا ۔ہر ٹیچنگ ہسپتال کے میڈیکل سپریٹنڈنٹ اور ہر پرنسپل اپنے اپنے دائرہ کار میں با اختیار ہو نگے ۔ایم ایس پرنسپل اور پرنسپل ایم ایس کے اختیارات میں مداخلت نہیں کر سکے گا، تاہم ایم ایس ہسپتال کا سربراہ ہو گا ۔ذرائع نے دعوی کیا ہے کہ لندن سے وطن واپسی پر وزیر اعلیٰ پنجاب سے اس حوالے سے منظوری حاصل کر لی جائے گی ۔ جس کے بعد انٹر ویو کیے جائیں گے اور آئندہ دو ہفتے تک پی آئی سی میں میجر جنرل (ر) کو چیف ایگزیکٹو تعینات کیا جائے گا ۔جبکہ پی آئی سی کے میڈیکل سپریٹنڈنٹ اور تمام پروفیسرز چیف ایگزیکٹو کو جوابدہ ہونگے ۔ذرائع نے بتایا ہے کہ پی آئی سی میں یہ ماڈل کامیاب ہونے کی صورت میں اس کو آگے بڑھایا جائے گا ۔اس حوالے سے مشیر صحت خواجہ سلیمان رفیق کا کہنا ہے کہ کئی ماڈلز زیر غور ہیں تاہم ٹیچنگ ہسپتالوں میں ایک نیا ماڈل متعارف کرایا جا رہا ہے ۔عہدہ کو چیف ایگزیکٹو یا کوئی اور نام بھی دیا جا سکتا ہے تاہم اس ماڈل کے تحت میڈیکل سپریٹنڈنٹس اور پرنسپلز کے اپنے اپنے اختیارات ہونگے مگر یہ دونوں چیف اایگزیکٹو کو جواب دہ ہونگے ۔اس پر تیاریاں آخری مراحل میں ہیں ۔انہوں نے کہا کہ یہ فیصلہ ہسپتالوں میں مزید بہتری لانے اور بعض ہسپتالوں کے ایم ایس صاحبان اور پرنسپلز میں اختیارات کی جاری سرد جنگ کے خاتمے کا باعث بنے گا ۔

مزید :

صفحہ آخر -