منشیات فروشوں کی فائرنگ سے شہید جماعت اسلامی کا رکن سپردخاک

منشیات فروشوں کی فائرنگ سے شہید جماعت اسلامی کا رکن سپردخاک

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر)گزشتہ روز منشیات فروشوں کی فائرنگ سے شہید ہونے والے جماعت اسلامی کے کارکن ذیشان کو مقامی قبرستان میں سپرد خاک کردیا گیاہے ۔شہید کی نماز جنازہ جمعرات کو اورنگی ٹاؤن کے علاقے مومن آباد میں امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن کی اقتداء میں اداکی گئی ۔نماز جنازہ میں شہید کے اہل خانہ ،عزیز و اقارب ،جماعت اسلامی کے رہنماؤں ،کارکنوں اور اہل علاقہ نے بڑی تعداد میں شرکت کی ۔اس موقع پر رقت آمیز منظر دیکھنے میں آئے اور ہر آنکھ اشکبار تھی ۔تفصیلات کے مطابق اورنگی ٹاؤن کے علاقے مومن آبادمیں منشیات فروشوں کی فائرنگ سے شہید ہونے والے جماعت اسلامی کے کارکن اور سینئر صحافی اصغر عمر کے بھتیجے ذیشان کو اورنگی ٹاؤن کے مقامی قبرستان میں سپرد خاک کردیا گیا ہے ۔نماز جنازہ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ آج ہم نے اپنے ایک اور کارکن کا لاشہ اٹھایا ہے ۔شہید ذیشان نے علاقے میں منشیات فروشوں کے خلاف آواز اٹھائی ،جس پر ان جرائم پیشہ عناصر نے ان کو اپنا نشانہ بنایا ۔انہوں نے کہا کہ اب تمام سیاسی جماعتوں کو اپنے اختلافات کو بالائے طاق رکھتے ہوئے منشیات فروشوں اور دیگر جرائم پیشہ عناصر کے خلاف ایک پیج پر آنا ہوگا اور ان کے مشترکہ جدوجہد کرنی ہوگی ۔منشیات فروش نوجوان نسل کو ذہنی طور پر معذور کرنے کے ایجنڈے پر عمل پیرا ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ڈی جی رینجرز اور آئی جی سندھ کو شہر کے مختلف علاقوں میں منشیات فروشوں کی بڑھتی ہوئی کارروائیوں کا نوٹس لینا چاہیے ۔اگر ایسا نہیں کیا گیا تو ہم سمجھیں گے کہ ان عناصر کو قانون نافذ کرنے والے اداروں کی سرپرستی حاصل ہے ۔حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ شہید ذیشان نے حق کے لیے آواز بلند کی جس کی پاداش میں اس کو زندگی سے محروم کردیا گیا ۔ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ فوری طور پر ذیشان کے قتل میں ملوث عناصر کو گرفتار کیا جائے اور قاتلوں کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے ۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -