کابل میں خود کش بم حملے کے بعد افغانستان کی طرح پاکستان الزام تراشی میں نہیں پڑنا چاہتا: اعزاز چوہدری

کابل میں خود کش بم حملے کے بعد افغانستان کی طرح پاکستان الزام تراشی میں نہیں ...
کابل میں خود کش بم حملے کے بعد افغانستان کی طرح پاکستان الزام تراشی میں نہیں پڑنا چاہتا: اعزاز چوہدری

  

واشنگٹن (ڈیلی پاکستان آن لائن) امریکا میں پاکستان کے سفیر اعزاز احمدچوہدری نے کہا ہے کہ افغانستان کی سرزمین پاکستان میں ہونے والی دہشت گردانہ کارروائیوں کے لئے استعمال ہو رہی ہے مگر پاکستان کابل میں ہونے والے خود کش بم دھماکے پر افغانستان کے ساتھ الزام تراشی میں نہیں پڑنا چاہتا۔

عمران خان کی زیر صدارت میڈیا منصوبہ بندی پر اہم اجلاس، چیئرمین پی ٹی آئی نے رہنماﺅں کو میڈیا پر جارحانہ انداز اپنانے کی ہدایت دے دی

واشنگٹن ٹائمز کے مدیروں اور رپورٹرز کے ساتھ ایک انٹرویو میں اعزاز احمد چوہدری نے کہا کہ کابل میں ہونے والا خود کش دھماکہ جس میں سیکڑوں شہری ہلاک و زخمی ہوئے ہیں بدترین دہشت گردی ہے اور ہم اس کی پرزور مذمت کرتے ہیں۔ یہ حملہ دہشت گردی کی کارروائیوں کو روکنے کیلئے کابل سے مل کر کام کرنے کے ہمارے عزم کو مزید مستحکم کرے گا۔

موبائل فون پر ٹیکسٹ میسج بھیجنے اور جنسی بیماریوں کے درمیان گہرا تعلق جدید تحقیق میں سامنے آگیا

اعزاز احمد چوہدری نے افغان خفیہ ایجنسیوں کے ان الزامات کو یکسرمسترد کر دیا کہ اس خود کش بم حملے میںپاکستان میں قائم حقانی گروپ ملوث ہے۔ اعزاز احمد چوہدری نے کہا کہ شمالی وزیرستان میں اب دہشت گردوں کے ٹھکانوں کو تباہ کر دیا گیا ہے اور انسداد دہشت گردی کی کارروائیوں کے نتیجے میں پاکستان میں حقانی نیٹ ورک کو ختم کر دیا گیا ہے اور یہ دہشت گرد پاکستان سے فرار ہو کر افغانستان چلے گئے۔ اس لئے افغان حکومت کو ان کے سدباب کیلئے اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔

مزید : قومی /اہم خبریں