کشمیر کی صورتحال باعث تشویش ہے ،شہری آبادی کو نشانہ بنانا قبول نہیں:اقوام متحدہ

کشمیر کی صورتحال باعث تشویش ہے ،شہری آبادی کو نشانہ بنانا قبول نہیں:اقوام ...

نیو یا رک( آن لائن )اقوام متحدہ نے بھارتی فورسز کی جانب سے لائن آف کنٹرول( ایل او سی )کے قریب آزاد کشمیر کے مختلف علاقوں کو بلااشتعال فائرنگ کا نشانہ بنانے پر تشویش کا اظہار کیا ہے، جس کے نتیجے میں گذشتہ روز 2 افراد جاں بحق اور 6 زخمی ہوگئے تھے۔معمول کی بریفنگ کے دوران ایک پاکستانی صحافی کی جانب سے کیے گئے سوال پر اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انٹونیو گوٹیرس کے ترجمان کا کہنا تھا، 'کشمیر کی صورتحال ہماری لیے باعث تشویش ہے'۔ترجمان اسٹیفن دوجارک کا مزید کہنا تھا کہ 'سیکریٹری جنرل اس صورتحال کو بغور دیکھ رہے ہیں اور اس کا جائزہ لے رہے ہیں'۔ تر جما ن نے کہا کہ لا ئن اف کنڑول پر شہر ی آ با دی کو نشا نہ بنا نہ کسی صو رت قا بل قبو ل نہیں ، بھا رت اس حوالے سے احتیا ط کا مظا ہر ہ کر ے تر جما ن کا کہنا تھا کہ کشید گی بڑ ھنے سے خطہ بحرا نی کیفیت سے دو چا ر ہو سکتا ہے اس لیے دونو ں پڑ وسی مما لک کو اختلا فا ت کے حل کے لیے مذا کرا ت کا را ستہ اختیا رکر نا چا ہیے ،یاد رہے کہ گذشتہ روز لائن آف کنٹرول کے مختلف سیکٹرز پر بھارت کی بلااشتعال فائرنگ کے نتیجے میں 2 افراد جاں بحق جبکہ 4 خواتین سمیت 6 افراد زخمی ہوگئے تھے۔واقعے کے بعد پاکستان نے بھارت کے ڈپٹی ہائی کمشنر جے پی سنگھ کو دفتر خارجہ طلب کر کے احتجاج ریکارڈ کرواتے ہوئے کہا تھا کہ بھارت 2003 کے سیز فائر معاہدے کی پاسداری کرے۔پاکستان اور ہندوستان کے تعلقات میں اڑی حملے کے بعد سے کشیدگی پائی جاتی ہے اور ہندوستان کی جانب سے متعدد مرتبہ لائن آف کنٹرول اور ورکنگ باونڈری کی خلاف ورزی کی جاچکی ہے۔ان واقعات کے بعد ہندوستان کے ڈپٹی ہائی کمشنر کو کئی مرتبہ دفتر خارجہ طلب کرکے سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزی پر احتجاج ریکارڈ کرایا گیا اور بھارتی سفارتکار سے مطالبہ کیا گیا کہ وہ اس بات کی یقین دہانی کرائیں کہ ان واقعات کی تحقیقات کی جائیں گی اور اس کی تفصیلات پاکستان کے ساتھ شیئر کی جائیں گی۔

مزید : کراچی صفحہ اول