جامع مسجد المعصوم کی بنیاد 1960ء میں رکھی گئی‘ 500 نمازیوں کی گنجائش

جامع مسجد المعصوم کی بنیاد 1960ء میں رکھی گئی‘ 500 نمازیوں کی گنجائش

ملتان (سٹی رپورٹر)جامع مسجد المعصوم معصوم شاہ روڑ کی بنیاد 1960میں رکھی گئی شروع میں مسجد مزار کے سامنے بنے پانی کے کنویں کے قریب کچی مٹی کے منڈیر بنا کر بنائی گئی تھی جس میں چند نمازیوں کی گنجائش تھی جس میں مسافر نماز ادا کرتے تھے بعد ازاں مسجد کی تعمیر کے لئے پانچ مرلہ پلاٹ (بقیہ نمبر47صفحہ12پر )

خریدا گیا جس پر ایک منزلہ سادہ مسجد بنائی گئی جس کی سعادت اس وقت کے بزرگ اور معروف تاجر ملک محمد رمضان نے حاصل کی جنہوں نے مسجد کی زمین کی خریداری سے لیکر مسجد کی تعمیر تک بھر پور دلچسپی کا مظاہرہ کیا 1980میں مسجد کی پرانی عمارت کو شہید کرکے اس کی تعمیر نو کا آغاز کیا گیا جس کی اندر ایک بڑا ہال ، اور برآمد بنایا گیا جبکہ نمازیوں کی تعداد میں اضافہ ہونے کے باعث مسجد کے اوپر دوسری منزل تعمیر کی گئی بعد ازاں مسجد کی تزئیں و آرائش کا سلسلہ کئی سال تک جاری رہا اس وقت مسجد کے نیچے ہال اور اوپر کی بلڈنگ میں 500 سے زائد نمازیوں کی گنجائش ہے مسجد کا مینار دیکھنے کے قابل ہے جو 90فٹ اونچائی کے باعث دور دور سے نظر آتا ہے اور مسجد کی خوبصورتی میں اضافہ کرتا ہے مسجد کے فرنٹ پر ملتانی نقش نگاری کا کام مہارت کے ساتھ کیا گیا ہے جس کی وجہ سے مسجد کی خو بصورت میں چار چاند لگ گئے ہیں مسجد مکمل اےئر کنڈیشن ہے جامع مسجد المعصوم مین معصوم شاہ روڑ پر ہونے کی وجہ سے نمازیوں کی توجہ کا مرکز بنا رہتا ہے ہر نماز میں بڑی تعداد میں نماز ی شریک ہوتے ہیں جامع مسجد المعصوم میں سالانہ عید میلاد النبی ، شپ قدر ، شب معراج ، گیارہویں شریف دیگر موقع پر اجتماعات منعقد کئے جاتے ہیں جس میں ملک کے معروف علماء کرام و نعت خوا ں حضرات شرکت کرتے ہیں

مزید : ملتان صفحہ آخر