رمضان بازاروں میں چینی کی عدم دستیابی معمول، اشیاء کی مہنگے داموں فروخت کی شکایات عام

رمضان بازاروں میں چینی کی عدم دستیابی معمول، اشیاء کی مہنگے داموں فروخت کی ...

ملتان، ٹھٹھہ صادق آباد، کبیروالا، بٹہ کوٹ(نیوز رپورٹر، نمائندگان) ناقص انتظامات انہتائی مہنگے داموں فروخت کے باعث رمضان بازار شہریوں کی توجہ حاصل کرنے میں ناکام ضلعی انتظامیہ کی عدم توجہی کے باعث رمضان بازاروں میں چینی کی عدم دستیابی معمول بن کررہ گئی ہے انتظامیہ کی سخت مانیٹرنگ کے تحت شناختی کارڈ پر جاری کی جانیوالی فی صارف 2کلو چینی کا پیکٹ رمضان بازاروں میں نایاب بنادیا گیا ہے جس کے باعث صارفین کو سخت مایوسی کا سامنا (بقیہ نمبر31صفحہ7پر )

کرنا پڑرہا ہے رمضان بازاروں میں صرف تین گھنٹوں کے بعد چینی ناپید ہوجاتی ہے جس کے بعد آنیوالے صارفین کو یہ کہہ کر سٹاک آرہا ہے گھنٹوں انتظار کے باوجود چینی کا سٹاک نہیں پہنچتا اور ساڑھے 5بجے رمضان بازاروں کا کلوزنگ ٹائم ہوجاتا ہے رمضان بازاروں کے مقررہ اوقات صبح8بجے سے بارہ بجے تک چینی فراہم کی جاتی ہے جبکہ صارفین صبح9بجے کے بعد ہی رمضان بازاروں کا رخ کرتے ہیں اس دوران صارفین تک تو چینی کم ہی پہنچتی ہے لیکن مرتب کئے جانیوالے ریکارڈ میں منوں چینی صارفین کو فراہم کردی جاتی ہے اللہ کے فضل و کرم سے تکرار کرنیوالی حکمران جماعت میں بیسیوں شوگر مل مالکان کی موجودگی کے باوجود رمضان المبارک مناسبت سے قائم کئے گئے رمضان بازاروں میں شہریوں کو چینی دستیاب نہیں ہورہی۔ ٹھٹھہ صادق آباد سے نامہ نگار کیمطابق میونسل کمیٹی کے سبزہ زار میں قائم رمضان بازار شہریوں کی توجہ حاصل کرنے میں ناکام رہا ، رمضان بازار میں انتظامات انتہائی ناقص ہیں شدید گرمی ،بے جا سکیورٹی انتظامات اور جگہ جگہ بیرئیر زاو رکاوٹیں کھڑی کرنے سے گاہک اس رمضان بازار کا رخ نہیں کرتا ، رمضان بازار میں سٹالز لگانے والے مالکان کا کہنا ہے کہ دن بھرگرمی میں بیٹھے رہتے ہیں گاہک یہاں کا رخ نہیں کرتے ہیں ،عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ رمضان بازار کی بجائے عام مارکیٹوں میں عوام کو ریلیف فراہم کیا جائے ۔ کبیروالا+ بٹہ کوٹ سے نا مہ نگار+ نمائندہ پاکستان کے مطا بق کبیروالا شہر میں قائم اکلوتا رمضان بازا ر انتظامیہ کی عدم تو جہ کی وجہ سے بد انتظا می کا شکار ہوتا چلا جا رہا ہے ،رمضان بازار میں گزشتہ چار روز سے ٹما ٹر منا سب ریٹس نہ ملنے سے مکمل طور پر غائب ہو چکے ہیں جب کہ آڑو ،لہسن ،لیموں، کھجور عام بازار سے مہنگی ہو نے کی وجہ سے صارفین نے بازار آنا بند کر دیا ہے جب کہ ما رکیٹ کمیٹی کے سٹال پر بھی گھی کی مقررہ قیمت سے زائد پر فرو خت کئے جا نے کی شکا یا ت بھی بیان کی گئی ہیں صارفین کی متعددبار شکا ئتوں کے با وجود انتظا میہ نے تاحال اشیائے خوردو نوش کی فرا ہمی اور مقررہ سرکا ری نرخوں پر فرو خت یقینی بنا نے کے لئے کوئی ٹھوس اقدام نہ اٹھا ئے ہیں جس بنا ء پر رمضان با زار ’’سنسان با زار ‘‘ میں تبدیل ہو چکا ہے سٹیزن رائٹس کو نسل کے چیئر مین چوہدری اختر جلال نعیم،صدر چوہدری محمد یٰسین کمبوہ، جنرل سیکر ٹری چوہدری عبدالوہاب آرائیں، راؤ آصف علی سعیدی پھلا نوالے،محمد حسین رو فی،چوہدری شہباز یعقوب ،رانا عدیل احمد ،راؤ سلیم ثاقب ،سعید احمد اسا مہ دیگر شہریوں نے رمضان بازار میں کھلی لوٹ ما ر کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اعلیٰ حکام سے فوری اصلا ح احوال کا مطا لبہ کیا ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر