روزے دار ڈاکٹر کا خاکروب کے علاج سے انکار ”دم توڑ گیا

روزے دار ڈاکٹر کا خاکروب کے علاج سے انکار ”دم توڑ گیا
روزے دار ڈاکٹر کا خاکروب کے علاج سے انکار ”دم توڑ گیا

  

عمرکوٹ (ویب ڈیسک)علاج نہ ہونے پر خاکروب چل بسا، متوفی کے بھائی کا کہنا ہے ڈاکٹر نے کہا میں روزے سے ہوں پہلے مریض کو نہلاﺅ پھر دیکھوں گا، اس دوران عرفان چل بسا ، بی بی سی کے مطابق عمر کوٹ تھانے میں نظیر مسیح کی مدعیت میں تحصیل ہسپتال عمر کوٹ کے ایم ایس ڈاکٹر جام کنبھار ، آرایم اور ڈاکٹر یوسف اور ڈیوٹی ڈاکٹر اللہ داد اٹھوڑ کے علاوہ تین میونسپل ملازمین پر یہ مقدمہ درج کیا گیا جس کے بعد پولیس نے ڈاکٹر جام کنبھار کو حراست میں لے لیا ہے۔

35 سالہ سینیٹری سپروائیزر عرفان مسیح کے بھائی پرویز مسیح نے بتایا کہ گندے نالے میں صفائی کے غرض سے اترنے کے بعد ان کے بھائی زہریلی گیس کی وجہ سے بے ہوش ہو گئے تھے اور جب انہیں علاج کیلئے ہسپتال لے گئے تو ڈاکٹروں نے ان پر لگی گندگی کی وجہ سے علاج کرنے سے انکار کر دیا۔ پرویز مسیح نے کہا کہ ’جب ہم ہسپتال پہنچے تو سب سے پہلے ڈاکٹر یوسف آئے جنہوں نے وارڈ بوائے کو کہا یہ کیچڑ میں بھرا ہوا ہے، اس کو نہلا کر صاف کرواﺅ میرے کپڑے خراب ہو جائیں گے۔

پرویز مسیح کے مطابق اس کے بعد دو اور ڈاکٹر ز ، اللہ داد اور ڈاکٹر جام کنبھار آئے لیکن ان دونوں نے بھی طبی امداد نہیں فراہم کی۔ پرویز مسیح نے کہا کہ آخر میں ڈاکٹر حنیف آریسر ہنچے اور اس نے کیچڑ میں لت پت میرے بھائی کو چیک کیا اور بتایا کہ اس کی موت واقع ہو چکی ہے مسیح برادری نے اس واقعہ کے بعد احتجاج کیا۔

مزید : عمرکوٹ