پولیو پروگرام، پاک افغان قیادت میں شدید غلط فہمیاں، پاکستان کا آئی ایم بی کی سفارشات پر بھر پور عملدر آمد کا فیصلہ 

پولیو پروگرام، پاک افغان قیادت میں شدید غلط فہمیاں، پاکستان کا آئی ایم بی کی ...

  



اسلام آباد(این این آئی)پاکستان نے 7 ماہ کی تاخیر کے بعد پولیو کے خاتمے سے متعلق عالمی ادارے (آئی ایم بی) کی سفارشات پر علمدرآمد کا فیصلہ کرلیا۔وزیر اعظم کے فوکل پرسن برائے پولیو بابر بن عطا نے نجی ٹی وی کو بتایا کہ تعیناتی کے ساتھ ہی میں نے آئی ایم بی کی سفارشات پر عملدرآمد کرنے کا فیصلہ کیا ہے لیکن جو لوگ پولیو پروگرام سے منسلک ہیں انہوں نے ایسا کرنے سے خبردار کیا اور کہا کہ ایسا کرنے سے سیاسی پیچیدگیاں جنم لے سکتی ہیں۔بابر بن عطا نے کہا کہ بہت افسوسناک بات ہے کہ گزشتہ برس کے مقابلے میں رواں برس 21 پولیو کیسز رپورٹ ہوچکے ہیں، اس لیے اب آئی ایم بی کی سفارشات کو یقینی بنانے کے علاوہ دوسرا راستہ نہیں۔آئی ایم بی کی رپورٹ کے مطابق پولیو پروگرام سے متعلق پاکستان اور افغانستان کی قیادت کے مابین شدید غلط فمہیاں ہیں۔رپورٹ کے مطابق جلال آباد میں کہاجاتا ہے کہ جنوبی افغانستان میں داخل ہونے والے پاکستانی سیوریج نظام میں وائرس ہے ادھر پاکستانی حکام کا دعویٰ ہے کہ افغانستان سے وائرس داخل ہورہا ہے۔رپورٹ کے مطابق پاکستان کے بعض حصوں میں انسداد پولیو مہم موثر انداز میں نہیں کی جاری جن میں دوکی، بلوچستان بھی شامل ہے جہاں 2018 میں پولیو کے تین کیسز سامنے آئے۔وزیر اعظم کے فوکل پرسن برائے پولیو بابر بن عطا نے کہا کہ آئی ایم بی کی سفارشات پر عملدرآمد کرنا بہت ضروری کیونکہ اب ہم خود بیوقوف نہیں بنا سکتے۔انہوں نے عزم کا اظہار کیا کہ اب ہم آئی ایم بی کی سفارشات کو بھرپور انداز میں روبہ عمل بنائیں گے۔ 

پولیو کا خاتمہ

مزید : صفحہ اول


loading...