برآمدی شعبے کی زیرو ریٹنگ کا خاتمہ صنعتوں کیلئے نقصان دہ ہے،عبدالمنان

  برآمدی شعبے کی زیرو ریٹنگ کا خاتمہ صنعتوں کیلئے نقصان دہ ہے،عبدالمنان

  



لاہور(سٹی رپورٹر)چیئرمین ٹیکسٹائل ٹریڈر ز ایسوسی ایشن رجسٹرڈ لاہور شیخ عبدالمنان نے کہا ہے کہ ٹیکسٹائل سمیت پانچ برآمدی سیکٹرز کی زیروریٹنگ ختم کرنا پاکستان کی برآمدی مصنوعات کی صنعتوں کو تباہ کرنے کے مترادف ہے۔ جس سے حکومت کو ایک کثیر ذرمبادلہ سے ہاتھ دھونا پڑے گا جبکہ برآمدی مصنوعات کی صنعتوں کے بند ہونے سے بے روزگاری کا ایک سیلاب اُمنڈ آئے گا۔ جسے سنبھالنا حکومت کے بس میں نہیں رہے گا۔

ٹیکسٹائل مصنوعات کی برآمدات جو کہ ملکی کل برآمدات کا 70 فیصد ہو ا کرتی تھی جو درحقیقت حکومتی غلط پالیسیوں کے بھیٹ چڑھ کے نتیجے میں آج ملکی کل برآمدات میں حصہ 40 فیصد سے بھی کم ہو کر رہ گیا ہے۔ GSP پلس کا درجہ حاصل کرنے کے باوجود پاکستان کی ویلیو ایڈڈ ٹیکسٹائل مصنوعات کی برآمدات میں اضافہ نہ ہونا درحقیقت حکومت کی اسی طرح کی غلط پالیسیوں کا اجراء ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...