موجودہ ایمنسٹی سکیم کی کامیابی غیر یقینی ہے شاہد رشید بٹ

موجودہ ایمنسٹی سکیم کی کامیابی غیر یقینی ہے شاہد رشید بٹ

  



اسلام آباد(صباح نیوز)تاجر رہنما شاہد رشید بٹ نے کہا ہے کہ موجودہ ایمنسٹی سکیم میں بہت سے غلطیاں، ابہام اور تضادات ہیں جبکہ اس میں ایسے سقم رکھے گئے ہیں جوٹیکس ماہرین اور سکیم سے فائدہ اٹھانے کے خواہشمند افراد کو ہضم نہیں ہو رہے ہیں جسکی وجہ سے اس سکیم کی کامیابی غیر یقینی ہے اور اسکے نتائج بھی سابقہ سکیموں سے مختلف نہیں ہونگے۔ اسلام آباد چیمبر کے سابق صدر شاہد رشید بٹ نے بز نس کمیونٹی سے گفتگو میں کہا کہ پاکستان میں مختلف حکومتوں نے متعدد بار ٹیکس ایمنسٹی سکیموں کا اعلان کیا ہے مگر کسی کے بھی خاطر خواہ نتائج برامد نہیں ہوئے ہیں۔اس سے نہ تو محاصل میں تسلی بخش اضافہ ہوا اور نہ ہی معیشت کی دستایز بندی میں کوئی مدد ملی ہے جبکہ دوسری طرف ٹیکس چوری، منی لانڈرنگ اور زیر زمین معیشت کا حجم کامیابی سے بڑھتا رہا ہے۔ ٹیکس ایمنسٹی سکیم کا مقصد ٹیکس چوروں کو معمولی ٹیکس ادا کر کے اپنے اثاثوں کو قانونی حیثیت دینا ہوتا ہے مگر پاکستان میں جو بھی سکیم لائی جاتی ہے وہ ٹیکس چوروں کی توجہ حاصل کرنے میں ناکام رہتی ہے اور وہ ٹیکس نیٹ سے باہر رہنے کو ہی ترجیح دیتے ہیں۔ایک طرف حکومت اپنے مقاصد حاصل کرنے میں ناکام رہتی ہے جبکہ دوسری طرف ایماندار ٹیکس گزار اسے اپنی حق تلفی سمجھتے ہیں جس سے مسائل میں اضافہ ہو جاتا ہے۔

انھوں نے کہا کہ ٹیکس ایمنسٹی سکیموں کے مقابلہ میں فائلر اور نان فائلر کے مابین امتیاز اور نان فائلرز کو سزا دینے کا عمل زیادہ فائدہ مند رہا ہے مگر اسکے کچھ نقصانات بھی سامنے آئے ہیں۔ ٹیکس ایمنسٹی سکیمیں اس وقت تک کامیاب نہیں ہو سکتیں جب تک انھیں سمجھنا آسان اور مقصد لوگوں کو معاشی دھارے میں شامل کرنا نہ ہو۔ ٹیکس چور اس وقت تک کسی سکیم سے فائدہ نہیں اٹھائیں گے جب تک انھیں ٹیکس نیٹ سے باہر رہنے کی سزا ملنے اور اثاثوں کے ضبط ہونے کا یقین نہ ہو جائے۔ پاکستان میں جتنی بھی ٹیکس ایمنسٹی سکیمیں متعارف کروائی گئی ہیں ان کے بعد ٹیکس چوروں کے خلاف ایسی کاروائی نہیں کی گئی جس سے وہ خوفزدہ ہو جائیں جس سے انکا حوصلہ بڑھتا گیا۔ٹیکس چوروں کو ٹیکس گزاورں سے زیادہ مراعات دینے کا سلسلہ بند کرنے کی ضرورت ہے۔جب تک ٹیکس ایمنسٹی سکیم کے بعد ٹیکس چوروں کے خلاف سخت کاروائی نہیں کی جاتی اور انھیں دوسروں کے لئے مثال نہیں بنایا جاتا اس وقت تک یہ سکیمیں وقت اور پیسے کے زیاں کے علاوہ کوئی نتیجہ نہیں دے سکتیں۔

مزید : کامرس