چارسدہ‘ تہرے قتل کیس کے حوالے سے جے آئی ٹی تشکیل

چارسدہ‘ تہرے قتل کیس کے حوالے سے جے آئی ٹی تشکیل

  



چارسدہ (بیورو رپورٹ)آئی جی خیبر پختوخواہ ڈاکٹر محمد نعیم کی ہدایت پر عمرزئی میں تین بھائیوں کے تہرے قتل کیس کے حوالے سے پولیس اور حساس ادارو ں پر مشتمل جے آئی ٹی تشکیل دی گئی۔مرکزی سہولت کا ر ملائشیا سے واپسی پر اسلام آباد ائیر پورٹ پر گرفتار۔تہرے قتل کیس کے مرکزی ملزم کو حکومت اور انٹر پول کے زریعے بہت جلد بیرون ملک سے گرفتار کیا جائے گا۔ ملزم کی جائیداد ضبطگی کے لئے متعلقہ اداروں کو مراسلہ ارسال کیا گیا ہے جبکہ ایف آئی آر میں انسداد دہشت گردی کے دفعات بھی شامل کئے گئے ہیں۔ڈی آئی جی محمد علی خان۔تفصیلات کے مطابق پویس سیکرٹریٹ چارسدہ میں ڈی آئی جی مردان محمد علی خان نے ڈی پی او چارسدہ اور ایس پی نذیر خان کے ہمر اء ہنگامی پریس کانفرنس میں عمرزئی تہرے قتلکیس کے حوالے سے اہم پیش رفت سے میڈیا کو آگاہ کیا۔اس موقع پر مقتولین کے لواحقین بھی موجود تھے۔ ڈی آئی جی مردان ریجن محمد علی خان نے کہا کہ عمرزئی قتل کیس میں اعلیٰ پولیس آفیسر ز پر مشتمل ٹیم نے کارائیاں مزیدتیز کر دی گئی ہے۔انہوں نے کہا کہ اسپیشل ٹیم نے کامیاب کاروائی کرتے مرکزی سہولت کار نسیم کو گرفتار کر لیا ہے جنہوں نے تہرے قتل کیس کے مرکزی ملزم نادر کو بیرون ملک فرار ہونے میں بھر پور اعانت کی۔گرفتار ملزم نسیم نے نہ صرف تہرے قتل کیس کے اصل ملزم نادر خان کو پناہ دی تھی بلکہ ان کے لیے ٹکٹ کا بھی بندوبست کیا اور خود بھی ان کے ہمراء ملائشیا چلے گئے۔ڈی آئی جی کے مطابق ملزم نسیم کو ملائشیا واپسی پر کل اسلام آ باد ائیر پورٹ سے گرفتار کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ خونی واقعہ کے حوالے سے پانچ سہولت کاروں سمیت تیس افراد کو شامل تفتیش کیا گیا جبکہ ملز م مرکزی ملزم ناد ر کی گاڑی کو بھی پولیس اسپیشل ٹیم نے برآمد کر لی ہے۔کیس کے حوالے سے پولیس نے مختلف سرکاری اداروں اسٹیٹ بینک آف پاکستان، نادرا اور دیگر اداروں کو مراسلے بھیج دیئے ہیں۔ اسٹیٹ بینک آف پاکستان کو ملزمان کی اکاونٹ منجمد کرنے، نادرا کو شناختی کارڈ بلاک کرنے جبکہ ایک او مراسلہ میں ملزمان کی جائیداد ضبط کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔ ایف ائی ار میں دفعات 7ATA,اور392 کا اضافہ کردیا گیا ہے۔واقعہ کے حوالے سے جوائینٹ انوسٹی گیشن ٹیم بنائی گئی ہے جس میں حساس اداروں کو بھی شامل کیا گیا ہے۔ چالان کے بعد ملزمان کے خلاف ریڈ وارنٹ حاصل کیا جائے گا۔ ڈی آئی جی محمد علی خان نے مزید کہا کہ لواحقین کو ہر ممکن تحفظ فراہم کیا جائے گا۔ اس موقع پر مقتولین کے لواحقین نے پولیس کی کارکردگی پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے آئی جی پی خیبر پختونخواہ ڈاکٹر محمد نعیم خان، ڈی آئی جی مردان محمد علی خان، ڈی پی او چارسدہ عرفان اللہ خان او ر ایس پی انوسٹی گیشن نذیر خان سمیت چارسدہ پولیس کے دیگر افسران کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ کیس کے حوالے سے چارسدہ پولیس نے ملزمان کی گرفتاری کے لئے بھر پور کو ششیں کی ہے اوروہ چارسدہ پولیس کی کارکردگی سے مطمئن ہیں، چارسدہ پولیس کا اسی طرح تعاون سے تمام ملزمان کو بہت جلد کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...