سینٹ مائیکل کیتھولک چرچ کی طرف سے مسلمانوں کے لئے افطار ڈنر

سینٹ مائیکل کیتھولک چرچ کی طرف سے مسلمانوں کے لئے افطار ڈنر
سینٹ مائیکل کیتھولک چرچ کی طرف سے مسلمانوں کے لئے افطار ڈنر

  



دبئی (طاہر منیر طاہر) شارجہ میں قائم سینٹ مائیکل کیتھولک چرچ نے گزشتہ چار سالوں کی روایات کو برقرار رکھتے ہوئے اس سال بھی اپنے مسلمان بھائیوں کے لئے ایک پرتکلف افطار ڈنر کا اہتمام کیا۔ مسلمانوں کے لئے افاری کا اہتمام 2016ءسے ہوا جب پورے فرانس نے 2016ءکو رحم کا سال قرار دیا۔ اس کے بعد 2017ءکو ؓخششی کا سال، 2018ءکو شیخ زاید کا سال جبکہ 2019ءکو صبر و برداشت کا سال قرار دیا گیا ہے۔

مسیحی برادری متحدہ عرب امارات میں اپنے پاکستانی بھائیوں کے ساتھ مل جل کر رہتی ہے اور ایک دوسرے کے دکھ سکھ میں شریک ہوتی ہے جو ایک اچھی اور قابل تقلید مثال ہے۔ مسلمانوں کے ساتھ بھائی چارہ کی فضا کو خوش گوار رکھنے کے لئے سینٹ مائیکل کیتھولک چرچ کی کوشش قابل تعریف و ستائش ہے۔ افطار ڈنر سے قبل مسیحی نمائندوں نے اظہار خیال کرتے ہوئے شارجہ کے حکمران عزت مآب ڈاکٹر شیخ سلطان محمد بن القاسمی کا چرچ کے لئے 1997ءمیں جگہ فراہم کرنے پر شکریہ بھی ادا کیا۔ اس چرچ میں 40 ہزار سے زائد مسیحی بڑی آزادی اور عقیدت سے عبادت کرتے ہیں۔ چرچ میں 5ہزار سے زائد بچے بھی زیر تعلیم ہیں جنہیں انگریزی، اردو، عربی، افریقن، تگالو، ملیالم، کونکنی اور مراٹھی کے علاوہ دیگر زبانوں میں بھی تعلیم دی جاتی ہے۔

اس موقع پر مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والوں کو حوصلہ افزائی کے سرٹیفکیٹ اور اعزازی شیلڈز بھی دی گئیں۔ پاکستانی سوشل ورکر فرزانہ منصور کو قابل مثال سوشل ورک اور مسیحی برادری سے اچھی کوآرڈی نیشن پر اعزازی شیلڈ بھی دی گئی۔

مزید : عرب دنیا


loading...