کس وقت آپ کو اپنے بستر کا گدا تبدیل کر لینا چاہیے؟ کمر درد سے بچنے کے لئے نشانیاں جانئے

کس وقت آپ کو اپنے بستر کا گدا تبدیل کر لینا چاہیے؟ کمر درد سے بچنے کے لئے ...
کس وقت آپ کو اپنے بستر کا گدا تبدیل کر لینا چاہیے؟ کمر درد سے بچنے کے لئے نشانیاں جانئے

  



نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) بستر کا گدا آرام دہ نہ ہو تو کمر درد جیسی تکالیف لاحق ہونے کا خطرہ بہت بڑھ جاتا ہے۔ اب ماہرین نے پانچ نشانیاں بتا دی ہیں کہ آپ کو کب اپنے بستر کا گدا تبدیل کر لینا چاہیے تاکہ آپ کمردرد سے محفوظ رہ سکیں اور پرسکون نیند لے سکیں۔ میل آن لائن کے مطابق زالوزنے نامی ماہر کا کہنا ہے کہ وقت کے ساتھ ساتھ گدے میں تبدیلی آتی ہے۔ جو شروع میں سخت ہوتے ہیں وہ نرم ہونے لگتے ہیں اور جو نرم ہوتے ہیں وہ قدرے سخت ہو جاتے ہیں۔ ایسے میں آپ کو اپنے جسم کی زبان سننی چاہیے۔ جب آپ بیدار ہوں اورجسم میں تکلیف اور تھکن محسوس کریں تو سمجھ لیں کہ بستر کا گدا بدلنے کا وقت آ گیا ہے۔

دوسری علامت گدے سے آنے والی بو ہے۔ جب گدا پرانا ہو جاتا ہے تو اس کی بو تبدیل ہو جاتی ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ گدے میں نمی بہت بڑھ چکی ہوتی ہے۔ جب گدا پرانا ہو جاتا ہے تو وہ نمی جذب کرنے لگتا ہے۔ اس کا ٹیسٹ کرنے کے لیے گدے پر کچھ پانی ڈالیں۔ اگر وہ پانی گدے کی دوسری طرف نکل جائے تو ٹھیک ہے اور اگر پانی باہر نہ نکلے تو اس کا مطلب ہے کہ گدا آپ کے پسینے اور دیگر نمی کو اپنے اندر روک رہا ہے اور اس سے بدبو پیدا ہو رہی ہے، چنانچہ اسے تبدیل کر لیں۔ تیسری علامت گدے کا بعض مخصوص جگہوں سے بیٹھ جانا ہے۔ جب گدا پرانا ہو جاتا ہے تو جہاں سے زیادہ استعمال ہو رہا ہوں وہاں سے نیچے بیٹھ جاتا ہے۔ اس کا تجربہ بھی اس طریقے سے کیا جا سکتا ہے کہ آپ جس جگہ سو کر اٹھیں، اگر وہ جگہ نیچی ہو چکی ہو تو سمجھ لیں کہ گدا تبدیل کرنے کا وقت آ گیا ہے۔ گدے کا زیادہ باﺅنس ہونا بھی اس کی مدت ختم ہو جانے کی علامت ہے۔ زالوزنے کا کہنا تھا کہ ”آخری علامت گدے کی عمر ہے۔ جب آپ کا گدا 8سال پرانا ہو جائے تو اسے لازمی تبدیل کر دیں خواہ وہ بہترین حالت میں بھی کیوں نہ ہو۔

مزید : ڈیلی بائیٹس