وفاقی بجٹ کے کل حجم کا 50 فیصد سود کی ادائیگی پر خرچ ہو گا

وفاقی بجٹ کے کل حجم کا 50 فیصد سود کی ادائیگی پر خرچ ہو گا

  

اسلام آباد (آن لائن) تحریک انصاف کی حکومت 12 جون کو نیا بجٹ پیش کرے گی۔ جس کا حجم 7ہزار600 ارب روپے ہوگا۔ قرضوں اور سود کی ادائیگی پر 3 ہزار 2 سو ارب روپے خرچ کئے جائیں گے۔جبکہ دفاعی بجٹ میں 10 فیصد اضافے کی تجویز پر غور کیا جا رہا ہے۔ جس کے بعد دفاعی بجٹ کیلئے ایک ہزار 4 سو ارب روپے مختص کئے جا سکتے ہیں۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق سبسڈیز اور پنشن ادائیگی کیلئے 700 ارب مختص کئے جا سکتے ہیں۔ 460 ارب روپے وفاقی حکومت کے اخراجات کیلئے مختص کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ وزارت خزانہ میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافے کی مختلف تجاویز زیرغور ہیں۔ابتدا میں 20 فیصد سے 50 فیصد تک اضافے کی مختلف تجاویز دی گئی لیکن کورو نا کے باعث ملکی معاشی صورتحال کے مدنظر سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 20 فیصد اضافے کی تجویز پر غور کیا جارہا ہے۔یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ ریٹائرڈ سرکاری ملازمین کی پنشن میں 20 فیصد تک اضافہ متوقع ہے۔ بجٹ 12جون کو پیش کیاجائے گا۔

وفاقی بجٹ

مزید :

علاقائی -