فلم اور ٹی وی انڈ سٹری کبھی ختم نہیں ہو سکتی، شوبز شخصیات

فلم اور ٹی وی انڈ سٹری کبھی ختم نہیں ہو سکتی، شوبز شخصیات

  

لاہور(فلم رپورٹر) شوبز کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی شخصیات کا کہنا ہے کہ پاکستان فلم اور ٹی وی انڈسٹری کبھی ختم نہیں ہو سکتی، ہم بقا کی جنگ لڑ رہے ہیں فلم انڈسٹری کے لوگ سنجیدگی سے اس کی بحالی کے لئے کوشش کررہے ہیں۔کرونا وائرس کے خاتمے کے بعد ایک بار پھر نئے جوش و جذبے سے کام کا آغاز ہوگا۔لاک ڈاؤن میں نرمی حکومت کا ایک احسن اقدام ہے۔ جو لوگ ہماری مخالفت کررہے ہیں ان کو مایوسی ہوگی۔ شوبز شخصیات نے کہا کہ ہم فلم انڈسٹری کی بقا کی جنگ لڑرہے ہیں اور اس میں ضرور کامیاب ہوں گے۔جبکہ ڈرامہ انڈسٹری والوں کے مختلف چینلز میں پھنسے ہوئے اربوں روپے بھی ملنے کی امید پیدا ہوگئی ہے اگر حکومت نے یہ رقم چینلز کو اور چینلز نے پروڈکشن ہاؤسز کو دے دی تو ایک بار پھر بڑی تعداد میں ڈرامے بننا شروع ہوجائیں گے۔شاہد حمید،شان،معمر رانا،شاہدہ منی،میگھا،ماہ نور،مسعود بٹ،اچھی خان،جرار رضوی،نادیہ علی،ہانی بلوچ،مایا سونو خان،عامر راجہ،آغا قیصر عباس،سہراب افگن،حاجی عبد الرزاق،یار محمد شمسی صابری،بینا سحر،ثناء بٹ،سدرہ نور،بی جی، عباس باجوہ،ندا چوہدری،ہنی شہزادی،اسد نذیر،نادیہ جمیل،عقیل حیدر،گلفام،طاہر انجم،طاہر نوشاد،ڈاکٹر اجمل ملک،ملک طارق،ارشد چوہدری،ڈیشی راج،آفرین خان،آشا چوہدری،احسن خان،نیلم منیر،رزکمالی،وہاج خان،اسد مکھڑا،گڈوکمال،جہانزیب علی،صوبیہ خان،ثمینہ بٹ،ناصر چنیوٹی،تابندہ علی،بابرہ علی،قیصر لطیف،ذیشان جانو،سلیم بزمی، لاڈا،ظفر عباس کھچی،مومنہ بتول،عائشہ جاوید،عارف بٹ،عاصم جمیلِ،آغا حیدر،حمیرا،عینی رباب،عروج،روبی انعم،اظہر بٹ اور رضی خان نے کہا کہ پاکستانی کی اچھی اور معیاری فلم کو بھی کامیابی کے باوجود سنیما سے اتاردی جاتی ہیں، پاکستانی فلموں میں سرمایہ کاری اس لیے نہیں ہورہی کہ انہیں مالی طور سے نقصان ہورہا ہے اگر پاکستانی فلمیں سنیماں پر چلیں گی تو وہ ضرور بزنس کریں گی تو فلموں میں لوگ سرمایہ کاری کریں گے ہم مایوس نہیں ہیں۔

مزید :

کلچر -