پی ٹی آئی غیر ملکی فنڈ نگ کیس سکروٹنی کمیٹی سے واپس لینے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ

پی ٹی آئی غیر ملکی فنڈ نگ کیس سکروٹنی کمیٹی سے واپس لینے کی درخواست پر فیصلہ ...

  

اسلام آباد(آن لائن) الیکشن کمیشن نے تحریک انصاف کی غیرملکی فنڈنگ کیس کی سماعت سکروٹنی کمیٹی سے واپس لینے سے متعلق درخواست پر فیصلہ محفوظ کر لیا۔ چیف الیکشن کمشنر کی سربراہی میں گزشتہ روز 5رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی اس موقع پر درخواست گزار اکبر ایس بابر اور انکے وکیل احمد حسن الیکشن کمیشن میں پیش ہوئے اس موقع پر درخواست گزار کے وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہاکہ میرے موکل اکبر ایس بابر تاحال پی ٹی آئی کے ممبر ہیں اور ایسا لگ رہا ہے سکروٹنی کمیٹی تحریک انصاف کے غیر ملکی ممنوعہ فنڈز کی تحقیقات نہیں کرنا چاہتی ہے اس موقع پر انہوں نے پی ٹی آئی فنڈنگ کی تحقیقات سکروٹنی کمیٹی کی بجائے الیکشن کمیشن سے کرانے کا مطالبہ کرتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ پی ٹی آئی نے 2015 سے اب تک فارن فنڈنگ کی تفصیلات جمع نہیں کرائیں۔ اس موقع پر تحریک انصاف کے وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہاکہ سکروٹنی کمیٹی نے جو ریکارڈ مانگا ہم نے فراہم کیا ہے اور آج تک ہماری طرف سے کیس میں کوئی تاخیر نہیں ہوئی۔ اس موقع پر درخواست گزار اکبر ایس بابر کے وکیل نے کہاکہ سکروٹنی کمیٹی ٹی او آرز کے مطابق کام نہیں کررہی،سکروٹنی کمیٹی ہمارے سامنے تحقیقات نہیں کرتی، ہمیں ریکارڈ نہیں دیا جارہاہے، الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی فنڈنگ پر سکروٹنی کمیٹی سے تاحال کارروائی کی رپورٹ ایک ہفتہ میں طلب کرتے ہوئے کہاکہ چار ہفتوں بعد سکروٹنی کمیٹی کی کاروائی کا دوبارہ جائزہ لیں گے۔علاوہ ازیں الیکشن کمیشن میں پی ٹی آئی پارٹی فنڈنگ کیس کے درخواست گزار اکبر ایس بابر کو مبینہ دھمکیوں سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران درخواست کے وکیل نے بتایا کہ میرے موکل کو حکمران جماعت کی جانب سے کیس واپس لینے کیلئے حراساں کیا جارہا ہے ہم الیکشن کمیشن کے رحم و کرم پر ہیں کسی کی آزادی اور زندگی کو خطرہ نہیں ہونا چاہیے۔ کمیشن کے ممبر پنجاب نے کہاکہ آپ 249 اے کا سہارا لے سکتے ہیں،آپ کو دھمکیوں کے معاملہ پر متعلقہ فورمز سے رابطہ کرنا چاہیے، جس پر درخواست گزار کے وکیل نے کاکہ ہم نے متعلقہ فورمز سے بھی رابطہ کیا ہے، اس موقع پر ممبر پنجاب نے کہاکہ ہمیں کیا پتہ کے آپ کے باہر پی ٹی آئی سے کیا معاملات ہیں جس پر چیف الیکشن کمشنر نے کہاکہ آپ کے دلائل دیکھ کر فیصلہ کرینگے،پی ٹی آئی فنڈنگ کیس کے درخواست گزار اکبر ایس بابر کو دھمکیاں ملنے سے متعلق درخواست پر فیصلہ محفوظ کر لیا۔دوسری جانب الیکشن کمیشن نے پاکستان مسلم لیگ ن کے غیر ملکی ممنوعہ فنڈنگ سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران مسلم لیگ ن کو تمام تفصیلات جمع کرانے کی ہدایت کرتے ہوئے کیس کی سماعت 3جولائی تک ملتوی کردی۔ الیکشن کمیشن میں گزشتہ روز مسلم لیگ(ن) فارن فنڈنگ کیس کی سماعت کے دوران مسلم لیگ(ن) کے وکیل اور درخواست گزار فرخ حبیب کے وکیل الیکشن کمیشن میں پیش ہوئے اس موقع پر درخواست گزار کے وکیل نے کمیشن کو بتایا کہ مسلم لیگ ن اپنے اکاؤنٹس کی تفصیلات سکروٹنی کمیٹی کو فراہم نہیں کر رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ مسلم لیگ ن نے کروڑوں روپے کی فنڈنگ دینے والے10 ڈونرز کے شناختی کارڈ نہیں دے سکی ایک ڈونر نے پانچ کروڑ کا چیک مسلم لیگ ن کو دیا لیکن شناختی کارڈ ساتھ نہیں لگایا،اس موقع پر مسلم لیگ ن کے سیکرٹری جنرل احسن اقبال روسٹرم پر آگئے اور کہاکہ ہمارے اکاؤنٹس کی تمام تفصیلات ریکارڈ پر ہیں، فاضل وکیل اپنے موکل کی پارٹی کو مشورہ دیں کہ وہ بھی اپنے غیر ملکی اکاؤنٹس کی تفصیلات کمیشن کو فراہم کریں جس پر فرخ حبیب کے وکیل نے کہاکہ میرا پی ٹی آئی سے کوئی لینا دینا نہیں، میرا اپنا کیس ہے، مسلم لیگ ن اپنے اکاؤنٹس کی بات کرے الیکشن کمیشن نے مسلم لیگ ن کو تمام ریکارڈ سکروٹنی کمیٹی کو جمع کرانے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت 3 جولائی تک ملتوی کردی۔

غیر ملکی فنڈنگ کیس

مزید :

پشاورصفحہ آخر -