ہسپتالوں کو آئندہ دوہفتوں میں کورونا ٹیسٹنگ لیبارٹری کیلئے فعال کردیا جائے گا: تیمور جھگڑا

ہسپتالوں کو آئندہ دوہفتوں میں کورونا ٹیسٹنگ لیبارٹری کیلئے فعال کردیا جائے ...

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)صوابی کے ہسپتالوں میں صحت سہولیات کا جائزہ لینے اور انہیں مزید بہتر اور مربوط بنانے کے لیے ایک اجلاس زیر صدارت وزیر صحت خیبر پختونخوا تیمور سلیم خان جھگڑا پشاور میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں اسپیشل سیکرٹری صحت ڈاکٹر فاروق جمیل ڈائریکٹر جنرل ہیلتھ سروسز ڈاکٹر طاہر ندیم، ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل ہیلتھ سروسز ڈاکٹر شاہین آفریدی، ڈائریکٹر پبلک ہیلتھ ڈاکٹر اکرام اللہ خان، باچا خان میڈیکل کمپلیکس کے سی ای او اور میڈیکل ڈائریکٹر نے شرکت کی۔ اجلاس میں متعلقہ حکام کی جانب سے وزیر صحت کو باچا خان میڈیکل کمپلیکس میں صحت سہولیات اور درپیش مسائل پر بریفنگ دی گئی۔ اس موقع پر یہ فیصلہ کیا گیا کہ ہسپتال انتظامیہ آئندہ دو ہفتوں کے اندر اندر کورونا ٹیسٹنگ لیبارٹری کو فعال بنائے گی۔ اسی طرح صحت سے متعلق مشنری جن میں ڈائیلاسز مشین، ای سی جی مشین، پورٹیبل الٹراساؤنڈ مشین اور لیب کے لیے بائیو سیفٹی کیبنیٹ بھی جلد فراہم کر دئیے جا ئیں گے۔ اجلاس میں یہ فیصلہ بھی کیا گیا کہ ہسپتال میں صحت عملے کی کمی کو دور کرنے کے بھرتیاں کرنے کے ساتھ ساتھ دوسرے ہسپتالوں سے عملہ وہاں تبدیل بھی کیا جائے گا جبکہ کلاس فور ملازمین کو آؤٹ سورس کیا جائے گا۔ اس موقع پر وزیر صحت کا کہنا تھا کہ حکومت صحت کے شعبے پر توجہ دے رہی ہے اور اس کورونا وباء کے دوران ہماری ساری توجہ ہی محکمہ صحت پر ہے۔ انہوں نے کہا تمام صحت عملہ اپنی زندگیاں داؤ پر لگا کر عوام کی جان بچانے میں مصروف ہے۔ دریں اثناء انہوں نے گزشتہ روز حیات آباد میڈیکل کمپلیکس میں پیش آنے والے واقعہ کو انتہائی افسوناک قرار دیتے ہوئے کہا کہ وہ بہت رنجیدہ ہیں کہ ڈیوٹی پر موجود ڈاکٹر پر ایک شخص نے تشدد کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہم ڈاکٹرز کے تحفظ کو یقینی بنائیں گے۔ عوام الناس سے اپیل ہے کہ بے صبری کا مظاہرہ کرنے کی بجائے صبر سے اور احتیاط سے کام لیں اور صحت عملے سے تعاون کریں۔

مزید :

صفحہ اول -