"ملازمین کے نام پرکھولے گئےاکاونٹس میں پیسے جمع کرواناغیر قانونی نہیں" رانا ثنا اللہ کے بیان پر لائیو شو میں قہقہے

"ملازمین کے نام پرکھولے گئےاکاونٹس میں پیسے جمع کرواناغیر قانونی نہیں" رانا ...

  

فیصل آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنما رانا ثنا اللہ کا خیال ہے کہ اگر ایک شخص اپنی رقم اپنے ملازموں کے اکاونٹ میں رکھتا ہے تو اس میں کوئی غلط بات نہیں ہے۔ان کے اس بیان پر لائیو شو میں قہقہے لگ گئے۔

سابق صوبائی وزیر قانون یہ بھی بھول گئے کہ یہ ایک غیر قانونی اقدام ہے۔

سما نیوز کی ایک رپورٹ کے مطابق ڈاکٹر معید پیرزادہ کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے رانا ثنا اللہ نے کہا فرض کریں آپ کا ایک ملازم ہے جس کی تنخواہ اٹھارہ سے بیس ہزار روپے ہے، اگر آپ اس کے نام سے اکاونٹ کھلواتے ہیں اور پھر ایک دوست سے اسی اکاونٹ میں رقم منگوالیتے ہیں تو اس میں خلاف قانون کچھ نہیں ہے۔

رانا ثنا اللہ دراصل نواز شریف کے بے نامی اکاونٹ سے متعلق الزامات کا دفاع کرنے کی کوشش کررہے تھے۔

ثنا اللہ نے مزید کہا کہ پینالسٹس اس حوالے سے وزیراعظم کے مشیر برائے احتساب شہزاد اکبر سے بھی پوچھ سکتے ہیں کہ کیا کسی دوسرے کے اکاونٹ کے ذریعے پیسے منگوانا کوئی جرم ہے۔

رانا ثنا اللہ کے ریمارکس سن کر بول نیوز کے شو کے دوسرے مہمان اور میری ٹائم منسٹر علی زیدی قہقہہ لگا کرہنس دیے اور کہا یہ اپنے جرم کا واضح اعتراف ہے۔

سما کے مطابق علی زیدی نے کہا آپ اپنے جرائم تسلیم کررہے ہیں اسے ہی تو منی لانڈرنگ کہتے ہیں اور یہ واضح فراڈ ہے۔ تاہم رانا ثنا اڑے رہے کہ اس میں کوئی مسئلہ نہیں ہے جب تک کہ کرپشن شامل نہ ہو۔

مزید :

قومی -ڈیلی بائیٹس -