مسلم لیگ ن کا پنجاب اسمبلی و حکومت قومی اسمبلی کے ساتھ ہی تحلیل کرنے کا اصولی فیصلہ

مسلم لیگ ن کا پنجاب اسمبلی و حکومت قومی اسمبلی کے ساتھ ہی تحلیل کرنے کا اصولی ...

لاہور (سعید چودھری) مسلم لیگ (ن) نے پنجاب اسمبلی اور صوبائی حکومت 16 مارچ کو قومی اسمبلی کے ساتھ ہی تحلیل کرنے کا اصولی فیصلہ کر لیا ہے۔ جبکہ نگران وزیراعظم کے لئے جسٹس (ر) ناصر اسلم زاہد کے نام پر تمام سیاسی جماعتوں کے اتفاق رائے کا امکان پیدا ہو گیا ہے۔ نگران وزیر اعلیٰ پنجاب کے لئے متعدد نام زیر غور ہیں، امکان ہے ہفتہ رواں میں وزیراعلیٰ میاں شہباز شریف نگران وزیراعلیٰ کے ناموں پر بھی مشاورت مکمل کرلیں گے۔ انتہائی ذمہ دار ذرائع نے بتایا ہے کہ پنجاب حکومت اور وفاقی حکومت کے درمیان متعدد معاملات طے پا گئے ہیں جس کے نتیجہ میں مسلم لیگ (ن) اور وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف نے قومی اسمبلی کی تحلیل کے ساتھ ہی پنجاب اسمبلی توڑنے کا اصولی فیصلہ کر لیا ہے تاکہ پورے ملک میں ایک ہی شیڈول کے تحت انتخابی عمل مکمل کیا جاسکے۔ موجودہ پنجاب اسمبلی 11 اپریل2008ءکو وجود میں آئی تھی اور اس کی پانچ سالہ میعاد 10 اپریل کو ختم ہونے والی ہے جبکہ قومی اسمبلی 16 مارچ کو اپنی میعاد مکمل کرنے ختم ہو جائے گی ۔اس سلسلے میں معلوم ہوا ہے کہ صوبائی اور وفاقی حکومت کے درمیان معاملات طے پا گئے ہیں کہ پنجاب اسمبلی قبل از وقت تحلیل کر دی جائے گی۔ دوسری طرف مختلف سیاسی جماعتوں کے ذرائع نے امکان ظاہر کیا ہے کہ نگران وزیراعظم کے لئے جسٹس (ر) ناصر اسلم زاہد کے نام پر اتفاق ہو جائے گااس حوالے سے متعلقہ سیاسی رہنماﺅں نے عندیہ دے دیا ہے جسٹس ناصر اسلم زاہد نے 2000ءمیں سپریم کورٹ کے جج کی حیثیت سے جنرل پرویز مشرف کے پی سی او کے تحت حلف اٹھانے سے انکار کر دیا تھا وہ سٹیٹ بینک آف پاکستان کے پہلے گورنر زاہد حسین کے صاحبزادے ہیں۔ وہ حقوق انسانی، حقوق نسواں بالخصوص قیدی خواتین کی بہبود کے حوالے سے ہمیشہ سرگرم عمل رہے ہیں۔ علاوہ ازیں پنجاب کے نگراں وزیراعلیٰ کے لئے میاں شہباز شریف کی پارٹی رہنماﺅں سے مشاورت جاری ہے۔ اس حوالے سے دو سابق ججوں جسٹس (ر) سید جمشید علی شاہ اور جسٹس (ر) میاں اللہ نواز سمیت متعدد نام زیر غور ہیں۔ مسلم لیگ (ن) نے معتبر ذرائع نے بتایا ہے کہ کل 4 مارچ کے اجلاس میں ان ناموں کو حتمی شکل دے دی جائے گی۔ جس کے بعد دیگر جماعتوں اور پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف کے ساتھ مشاورت مکمل کرکے ہفتہ رواں میں نگران وزیراعلیٰ کے معاملے کو فائنل کر دیا جائے گا۔

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...