پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ واپس لینے کا حکم ، اوگرانے نوٹیفیکیشن جاری کردیا

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ واپس لینے کا حکم ، اوگرانے نوٹیفیکیشن ...

اسلام آباد(ثناءنیوز)وزیراعظم راجہ پرویز اشرف نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں ہونے والا اضافہ واپس لینے کے احکامات جاری کر دئیے ہیں۔ اوگرا نے قیمتوں میں کمی کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا ہے۔یہ احکامات قومی اسمبلی میں ہونے والے احتجاج اورعوام کی مخالفت کے بعد جاری ہوئے ہیں۔حالیہ اضافہ کا نوٹیفکیشن جاری ہونے کے بعد مسلم لیگ نواز اور متحدہ قومی موومنٹ نے قومی اسمبلی کے اجلاس سے واک آﺅٹ کیا تھا۔وزیراعظم راجہ پرویزاشرف نے کہا ہے موجودہ جمہوری حکومت عوام پر کسی بھی قسم کا بوجھ نہیں ڈالے گی۔ذرائع کے مطابق گزشتہ روز وفاقی وزرا ءنے صدر آصف علی زرداری سے ملاقات میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ پر اپنے تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے انتخابات سے قبل اس اضافے کی مخالفت کی تھی۔چیئرمین اوگرا نے وزیراعظم کے احکامات کے بعد بتایا کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں اٹھائیس فروری کی سطح پر واپس آچکی ہیں۔انہوں نے کہا کہ پیٹرول پمپس پرانی قیمتوں پر پٹرول فروخت کریں۔یاد رہے کہ حکومت نے پہلی مارچ سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں تقریباً چار فیصد تک اضافہ کیا تھا۔وزارت پٹرولیم اور آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی(اوگرا(نے آئل کمپنیز کی مشاورت کے ساتھ پٹرول کی قیمت میں تین اعشاریہ چار دو فیصد تک، ہائی اسپیڈ ڈیزل کی قیمت میں تین اعشاریہ نو فیصد، مٹی کے تیل میں تین اعشاریہ چار سات فیصد جبکہ لائٹ ڈیزل کی قیمت میں چار اعشاریہ دو فیصد کی شرح سے اضافہ تجویز کیا تھا۔اوگرا کے ایک عہدے دار نے نجی ٹی وی کو بتایا تھا کہ یہ اضافہ پٹرولیم مصنوعات کی عالمی سطح پر زیادہ سے زیادہ شرح کی بنیاد پر کیا گیا تھا۔سولہ فیصد سیلز ٹیکس اور پارکو ریفائنری کو پورے ملک میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کو یکساں شرح پر رکھنے کی اجازت بھی اس اضافہ کا سبب تھا۔

قیمتیں واپس

مزید : صفحہ اول