خواتین نے جنرل سیٹوں پر مردانہ وار الیکشن لڑنے کیلئے ایک بار پھر تیاریاں شروع کردیں

خواتین نے جنرل سیٹوں پر مردانہ وار الیکشن لڑنے کیلئے ایک بار پھر تیاریاں ...

لاہور(شہباز اکمل جندران//انویسٹی گیشن سیل )عام انتخابات میں خواتین کی مخصوص نشستوں کی بجائے ، جنرل سیٹوں پر مردانہ وار الیکشن لڑنے والی سیاسی خواتین نے ایکبا ر پھرسے الیکشن کی تیاریاں شروع کردی ہیں۔روبینہ شاہین وٹو، عابدہ حسین ، صغرا مام ، سمیرا ملک، تہمینہ دولتانہ ، ڈاکٹر زمرد یاسمین،نجمہ حمید ، شیری رحمن ، طاہر ہ آصف ، انوشہ رحمن ، ثمینہ خالد گھرکی، کشمالہ طارق اور حنا ربانی کھر و دیگر 2013کے الیکشن میں بھی مخصوص نشستوں کی بجائے، جنرل الیکشن لڑینگی۔ معلوم ہوا ہے کہ ملک کی قومی اسمبلی میں خواتین کے لیے 60مخصوص نشستیں رکھی گئی ہیں۔ ان میں پنجاب کے لیے 35، سندھ کے لیے 14، خیبر پی کے کے لیے 8اور بلوچستان کے لیے 3نشستیں رکھی گئی ہیں۔ لیکن ملک میں بہت سی ایسی خواتین بھی ہیں ۔جو مخصوص نشستوں پر الیکشن لڑنے کی بجائے ، جنرل نشستوں پر مردوں کے شانہ بشانہ نہ صرف الیکشن لڑتی ہیں ۔بلکہ بہت سے حلقوں میں خواتین کامیاب بھی ہوتی ہیں۔ اور ایسی خواتین نے 2013کے الیکشن کے لیے بھر پور تیاریاں شروع کردی ہیں۔ ماضی میں جنرل نشستوں پر الیکشن لڑنے والی اور 2013کے الیکشن میں جنرل نشستوں پر الیکشن لڑنے کی خواہاں خواتین میں روبینہ شاہین وٹو، عابدہ حسین ، صغرا مام ، سمیرا ملک، تہمینہ دولتانہ ، ڈاکٹر زمرد یاسمین،نجمہ حمید ، شیری رحمن ، طاہر ہ آصف ، انوشہ رحمن ، ثمینہ خالد گھرکی، کشمالہ طارق اور حنا ربانی کھرکے علاوہ صبا صادق، غزالہ سعد رفیق، زبیدہ جلال ، عاصمہ ارباب عالمگیز، گلشن سعید ، نیلو فر بختیار، شہناز شیخ ، عطیہ عنائت اللہ، ماروی میمن ، بشریٰ رحمن، صائمہ افضل تارڑ، غلام بی بی بھروانہ ، میمونہ ہاشمی، مہرین انور راجہ اور شہناز وزیر علی و دیگر شامل ہیں۔

مزید : صفحہ آخر